ائیرایشیا کے طیارے کو حادثے کے دن پرواز کی اجازت نہ تھی،انڈونیشیا -
The news is by your side.

Advertisement

ائیرایشیا کے طیارے کو حادثے کے دن پرواز کی اجازت نہ تھی،انڈونیشیا

جکارتہ :آٹھائیس دسمبر کو حادثے کا شکار ہونے والے ایئر ایشیا کے طیارے کے دو بڑے ٹکڑے مل گئے ہیں، سمندر سے نکالی گئی لاشوں کی تعداد تیس ہوگئی ہے۔

انڈونیشیا سے سنگاپور جاتے ہوئے بحیرۂ جاوا میں گر کر تباہ ہونے والے ایئر ایشیا کے مسافر بردار طیارے کے پاس حادثے والے دن پرواز کا لائسنس ہی نہیں تھا ۔

ایئربس اے تھری ٹو زیرو طیارے کو حادثے والے روز یعنی اتوار کو پرواز کرنے کی اجازت نہ تھی، انڈونیشیا کی وزارتِ ٹرانسپورٹ نے سورابايا سے سنگاپور جانے والی ایئر ایشیا کی تمام پروازیں معطل کر دی ہیں۔

حادثے کا شکار ہونے والے طیارے پر ایک سو باسٹھ افراد سوار تھے۔

ریسکیو ایجنسی چیف کے مطابق ایئرایشیا کے حادثے کا شکار طیارے کے دو بڑے ٹکڑے مل گئے ہیں، ملبے کے قریب سمندر سے تیل بہنے کے شواہد بھی ملے ہیں۔

گزشتہ روز سمندر سے مزید لاشیں نکالی گئی ہیں۔ جن کے بعد انڈونیشیائی حکام کے مطابق اب تک ملنے والی لاشوں کی تعداد تیس ہوگئی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں