The news is by your side.

Advertisement

احمدیوں کی عبادت گاہ پر حملہ کرنیوالے 2 دہشتگردوں کو سزائے موت

لاہور: عدالت نے اقلیتوں کی عبادت گاہ پر حملہ کیس کے مجرم معاویہ کو سات مرتبہ سزائے موت اورعبداللہ کو نو بار عمر قید کی سزا سنادی۔

 دونوں مجرموں کو انسداد دہشت گردی کی عدالت میں پیش کیاگیا، عدالت نے وکلاء کے دلائل سننے کے بعد معاویہ کو سات مرتبہ سزائے موت اور تینتیس لاکھ روپے جرمانے کی سزا سنادی جبکہ شریک مجرم عبداللہ کو نو بار عمر قید اور تینتیس لاکھ جرمانے کی سزا سنائی گئی مجرم معاویہ اقلیتوں کی عبادت گاہ پر باقاعدہ حملے میں ملوث تھا۔

لاہور میں انسدادِ دہشت گردی کی خصوصی عدالت نے ساڑھے چار برس قبل احمدیوں کی عبادت گاہ پر حملے کے جرم میں ایک حملہ آور کو سزائے موت جبکہ دوسرے کو عمر قید کی سزا سنائی ہے، یہ حملہ 28 مئی 2010 کو ماڈل ٹاؤن کے علاقے میں واقع عبادت گاہ پر گیا تھا۔

ماڈل ٹاؤن کے علاوہ حملہ آوروں نےگڑھی شاہو میں بھی ایک عبادت گاہ پر حملہ کیا تھا اور ان دونوں حملوں میں87 افراد ہلاک اور 100 سے زیادہ زخمی ہوئے تھے۔

لاہور پولیس نے قتل ، اقدام قتل اور انسداد دہشت گردی ایکٹ کے علاوہ دیگر فوجداری دفعات کے تحت ان دونوں عبادت گاہوں پر حملوں کے الگ الگ مقدمات درج کیے تھے، تھانہ ماڈل ٹاؤن میں درج مقدمے میں عبداللہ عرف محمد اور معاویہ نامزد ملزم تھے جبکہ دیگر ملزم نامعلوم لکھے گئے تھے۔

گڑھی شاہو کی عبادت گاہ پر حملے کے سلسلے میں چھ نامعلوم افراد کے خلاف درج کروایا گیا تھا، احمدیوں کی دونوں عبادت گاہوں پر مسلح حملہ آوروں نے جمعے کی دوپہر اس وقت حملے کیے تھے جب بڑی تعداد میں لوگ عبادت کے لیے جمع تھے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں