site
stats
سندھ

اردو بولنے والے اصل پاکستانی ہیں، بابر غوری

کراچی: متحدہ قومی موومنٹ کے رہنماء بابر غوری کا کہنا ہے کہ شہری علاقوں سے نفرتیں اور لسانی تعصب مناسب رویہ نہیں ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ اردو بولنے والوں نے ہمیشہ سندھ کے عوام کا ساتھ دیا ہے چاہے وہ کالاباغ ڈیم کا معاملہ ہو یا این ایف سی مہاجروں نے ہمیشہ سندھ کے باسی کی حیثیت سے سندھ کے مؤقف کی حمایت کی ہے لیکن جب آبادی کی بنیاد پر صوبے کو حصہ ملا تو آگے کیوں آبادی کی بنیاد پر تقسیم نہیں کیا گیا۔ ۔

تین ہزار ارب روپے گذشتہ سالوں میں سندھ کو ملے شہری علاقوں میں ستر فیصد آبادی رہتی ہے ستر فیصد تو رہنے دیں جو پرانا کوٹہ ہے اس کے حساب سی بھی بارہ سو ارب روپے بنتے ہیں لیکن صرف چالیس ارب روپے دیے گئے۔

ان کا کہنا تھا کہ سرکاری ملازموں میں اربن رولر کا کوٹہ ہوتا ہے لیکن اس بار پہلی بار ایسا ہوئا کہ پبلک سروس کمیشن میں پیپلز پارٹی نے تمام افراد اپنے بھرتی کرادئے۔
انہوں نے پیر مظہر الحق کے بیان کا حوالہ دیا کہ حیدر آبا د میں یونیورسٹی اس لئے نہیں بنائی جائے کہ اردو بولنے والے عوام اس سے مستفید ہوں گے ۔

بابر غوری نے سوال کیا کہ کیا اردو بولنے والے پاکستانی نہیں ہیں اردو بولنے والوں نے پاکستان کے لئے بائیس لاکھ لاشوں کی قربانی دی ہے ان سے زیادہ پاکستانی کوئی نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ جب آپ حق نہیں دیں گے تو آپ کے خلاف آواز اٹھے گی جب تعلیم نہیں دی جائے روزگار نہیں دیا جائے تو نوجوانوں کا دہشت گردوں اور پاکستان کے دشمنوں کے ہاتھو ں میں جانے سے کون روکے گا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top