اریبہ قتل کیس : اریبہ کے بھائی کے انکشافات -
The news is by your side.

Advertisement

اریبہ قتل کیس : اریبہ کے بھائی کے انکشافات

لاہور: اریبہ قتل کیس میں اریبہ کے بھائی نے مزید انکشافات کئے ہیں، اریبہ کا اصل نام عبیرہ ہے جبکہ پولیس کی حراست میں موجود ملزمہ طوبی کا اصل نام اِزمہ راؤ ہے۔

دو روز قبل قتل ہونے والی اریبہ کا کیس ایک نیا رخ اختیار کرتا جا رہا ہے۔ اریبہ کے بھائی زوہیب نے اے آر وائی نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے انکشاف کیا ہے کہ اسکی بہن کا نام اریبہ نہیں بلکہ عبیرہ تھا اور وہ ماڈل بننے کی کوشش میں نہیں تھی کیوں کہ وہ کئی سال سے ماڈل تھی۔

اسکا مزید کہنا تھا کہ طوبی جو کہ پولیس کی حراست میں ہے اسکا اصل نام ازمہ راؤ ہے اور وہ طوبی کے نام سے جعلی شناختی کارڈ بنوا کر کرائے کے مکان میں رہتی تھی۔

اسکا کہنا تھا کہ عبیرہ کے قتل میں ازمہ کے علاوہ کچھ اور لوگ بھی ملوث ہیں، جن کی جانب سے انہیں بھی قتل کی دھمکیاں موصول ہو رہی ہیں۔

عبیرہ کے بھائی زوہیب نے وزیرِاعلی پنجاب سے انصاف فراہم کرنے کی اپیل کی ہے۔

اس سے قبل لاہور کے علاقے شیراکوٹ بس اڈے پر کھڑی ایک بس سے تیرہ جنوری کو لاوارث صندوق ملا تھا ، جس سے ایک خوبرو لڑکی کی لاش برآمد ہوئی تھی، جس کی شناخت عبیرہ کے نام سے ہوئی۔ مقتولہ پنجاب یونیورسٹی کی طالبہ اور مسلم ٹاؤن ہاسٹل میں رہائش پذیر تھی۔

اے آر وائی نیوز نے بس اڈے سے سی سی ٹی وی فوٹیج حاصل کی تو معمہ حل ہوا، پولیس کے مطابق ماڈل ٹاؤن کی رہائشی طوبٰی نامی خاتون نے اپنے ساتھی سے مل کر سیالکوٹ کی دو ٹکٹیں حاصل کیں اور صندوق بس کے اندر رکھ کر غائب ہوگئے۔

پولیس کے مطابق مرکزی ملزمہ طوبی کو گرفتار کرلیا ہے، ملزمہ نے اپنے بیان میں یہ بتایا کہ عبیرہ کو ماڈلنگ کا شوق تھا اور وہ اسے ورغلا کر ماڈل ٹاؤن لے گئی جہاں اسے قتل کیا، پولیس کا کہنا ہے کہ ملزمہ کے کزن نے اس کے ساتھ مبینہ طور پر زیادتی کی تھی، پولیس اس کے کزن کو تلاش کررہی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں