اسرائیل کا غزہ میں5گھنٹے جنگ بندی کا اعلان،حماس بھی راضی -
The news is by your side.

Advertisement

اسرائیل کا غزہ میں5گھنٹے جنگ بندی کا اعلان،حماس بھی راضی

غزہ:  دو سو بیس فلسطینیوں کو شہید کرنے کے بعد اسرائیل پانچ گھنٹے کی جنگ بندی پرآمادہ ہوگیا  ہے،جنگ بندی کی درخواست اقوام متحدہ نے کی تھی جبکہ حماس نے بھی جنگ بندی قبول کرنےکا اعلان کیا ہے۔

نو روز تک نہتے اور بے گناہ فلسطینیوں پر بموں کی بارش برسانے کے بعد اقوام متحدہ کی درخواست پر بالآخر اسرائیل پانچ گھنٹے کی جنگ بندی پر آمادہ ہوگیا، جنگ بندی مقامی وقت کے مطابق آج صبح دس بجے سے تین بجے تک نافذ ہوگی، جنگ بندی کی مہلت شہریوں کو غذا اور دیگر ضروری اشیاء ذخیرہ کرنے کے لیے دی گئی ہے، حماس نے بھی جنگ بندی پر رضامندی ظاہرکی ہے۔

آٹھ جولائی کو آپریشن پروٹیکٹو ایج کے نام سے شروع کئے اسرائیل کے وحشیانہ حملوں میں اب تک دو سو سے زائد فلسطینی شہید اور چودہ سو سے زیادہ زخمی ہوچکے ہیں، شہید اور زخمی ہونے والوں میں عورتوں اور بچوں کی بڑی تعداد بھی شامل ہے۔

اسرائیل کی سفاکیت کا ایک اور واقعہ غزہ کے ساحل پر پیش آیا، جہاں ساحل  پر کھیلتے معصوم بچوں کو بمباری کا نشانہ بنایا گیا، نو،دس اورگیارہ سال کے چار بچے اسرائیل بربریت کی بھینٹ چڑھ گئے،اسرائیلی فضائی حملوں میں غزہ میں بارہ سو سے زائد مقامات پر بمباری کی گئی۔

امریکا غزہ کی صورتحال پر دوہرا معیار قائم کیے ہوئے ہے، امریکا کا کہنا ہے کہ اسرائیل کو اپنے دفاع اور بمباری کا حق حاصل ہے تودوسری جانب جنگ بندی کے لیے کوششوں میں مصروف ہے۔

 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں