اسلامی نظریاتی کونسل نے تحفظ پاکستان قانون کو خلاف شریعت قرار دے دیا -
The news is by your side.

Advertisement

اسلامی نظریاتی کونسل نے تحفظ پاکستان قانون کو خلاف شریعت قرار دے دیا

اسلام آباد: اسلامی نظریاتی کونسل نے تحفظ پاکستان قانون کو خلاف شریعت قرار دے دیا، مولانا محمد خان شیرانی کہتے ہیں اگر عورت مرتد ہوتو نکاح نہیں ٹوٹتا۔

اسلامی نظریاتی کونسل کے دو روزہ اجلاس میں نو نکات کا جائزہ لیا گیا، اسلامی نظریاتی کونسل کے سربراہ مولانا محمد خان شیرانی نے قرار دیا کہ حکومت تحفظ پاکستان ایکٹ اور قومی سلامتی پالیسی پر بحث کیلئے مستقل اجلاس بلائے، جس میں دفاعی، سیاسی،اور قانونی ماہرین کو بلا کر ان سے مشاورت بھی کی جائے۔

اسلامی نظریاتی کونسل پارلیمنٹ کی رہنمائی کیلئے ہے اور قانون سازی پارلیمنٹ کا کام ہے، اجلاس میں بچوں کی مشقت کے حوالے سے قانون سازی کی ضرورت پر زور دیا گیا، محمد خان شیرانی نے کہا کونسل بچوں کی مشقت کے لیےجامع رپورٹ تیارکررہی ہےجسےپارلیمنٹ میں قانون سازی کیلئے بھجوایاجائے گا، والدین سات سال سے کم عمر بچوں کی پٹائی نہ کریں۔ اور سات سال سے بڑے بچوں کو تربیت کیلئے صرف زبانی سرزنش سے کام لیں، محمد خان شیرانی نے کہا اگر عورت مرتد ہوتو نکاح نہیں ٹوٹتا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں