اسلام آباد: امام بارگاہ قصر سکینہ میں دھماکہ 2جاں بحق، 8زخمی -
The news is by your side.

Advertisement

اسلام آباد: امام بارگاہ قصر سکینہ میں دھماکہ 2جاں بحق، 8زخمی

اسلام آباد: شکریال روڈ پر واقع امام بارگاہ  امام بارگاہ قصر سکینہ میں دھماکہ اور فائرنگ ہوئی جس کے نتیجے میں 2 افراد جان بحق جبکہ 8 زخمی  ہوگئے۔

تفصیلات کے مطابق اسلام ااباد کے شکریال روڈ پر واقع امام بارگاہ امام بارگاہ قصر سکینہ میں دھماکے کے بعد فائرنگ کی اطلاعات موصول ہونے کے بعد پولیس اور ریسکیو ٹیمیں روانہ کر دی گئی گئی ہیں۔

ایدھی زرائع کے مطابق دھماکے کے نتیجے میں 2 افراد جان کی بازی ہار گئے ہیں،  جبکہ زخمیوں کو اسلام آباد کے پمز اسپتال میں منتقل کیا جارہا ہے۔

ابتدائی اطلاعات کے مطابق امام بارگاہ میں دھماکے کے بعد علاقے کی بجی بند ہوگئی ہے جس ریسکیو ٹیموں کا کام کر نے مشکلات کا سامنا ہے، دھماکے کی آواز دور دور تک سنی گئی جس سے قریبی عمارتوں کےشیشے بھی ٹوٹ گئے۔

پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ دہشتگردوں کی تعداد 6 سے زائد ہے، انہوں نے مزید بتایا کہ کچھ دہشتگرد قریبی  علاقے میں چھپ گئے ہیں ،جن کی گرفتاریوں کے لئے پولیس نے علاقے میں سرچ آپریشن شروع کردیا ہے۔

ترجمان پمز اسپتال کے مطابق جاں بحق ہونے والے دو افراد کی شناخت غلام حسین اور عبدالشکور کے نام سے ہوئی جبکہ دیگر زخمیوں کی حالت بھی تشویشناک ہے جن میں ایم الطاف حسین، سید سخاوت اور ساجد علی شاہ شامل ہیں۔

ذرائع کے مطابق حملہ آور کی امام بارگاہ پر تعینات سیکیورٹی گارڈ سے مزاحمت بھی ہوئی جس کے بعد حملہ آور نے گارڈ کو گولی مار کے اندر گھسا تھا۔

واقعے کے بعد فوج ،رینجرز اور پولیس نے جائے وقوعہ کو گھیرے میں لے لیا ،جاں بحق ہونے والوں میں اے آروائی نیوز کے کیمرہ مین خرم شہزاد قریشی کےو الدغلام حسین قریشی بھی شامل ہیں لاشوں اورزخمیوں کو پمز اسپتال منتقل کیا گیا جہاں دو زخمیوں کی حالت تشویشناک ہے۔

عینی شاہد کے مطابق دھماکہ نماز مغرب کے دوران ہوا، شکریال روڈ پر واقع امام بارگاہ میں فائرنگ  کے بعد  دھماکے کی آواز سنی گئی ہے۔

عینی شاہدین کے مطابق امام بارگاہ کے گارڈ نے جان کی قربانی دے کر مزید قیمتی جانوں کے ضیاع کو بچا لیا اور خودکش حملہ آور ٹارگٹ تک پہنچنے میں ناکام رہا۔

 خودکش حملہ آور نے امام بارگاہ میں گھسنے کی کوشش کی تاہم وہاں موجود گارڈ نے جان پر کھیلتے ہوئے حملہ آور کو گیٹ پر ہی روک لیا جس پر خودکش حملہ آور نے وہیں خود کو دھماکے سے اڑا لیا جس کے نتیجے میں2 افراد شہید ہوئے۔

عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ امام بارگاہ میں مغرب کی نماز ادا کی جا رہی تھی اور اگر خودکش حملہ آور اندر گھسنے میں کامیاب ہو جاتا تو شہادتوں کی تعداد کئی گنا زیادہ ہو سکتی تھی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں