اشتعال انگیز تقریر کرنے پر پیش امام کو 10سال 4 ماہ قید کی سزا -
The news is by your side.

Advertisement

اشتعال انگیز تقریر کرنے پر پیش امام کو 10سال 4 ماہ قید کی سزا

بھاولپور : انسداد دہشتگردی کی عدالت نےنماز فجر کے بعد اشتعال انگیز تقریر کرنے پر ایک مولانا کو 10 سال 4 مہینے قید کی سزا سنادی۔

تفصیلات کے مطابق عدالت کے جج خالد ارشد نے عبدلاغنی نامی شخض پر  سات لاکھ 50ہزار جرمانہ بھی عائد کیا۔

استغاثہ کا کہنا تھا کہ قائم پور کی ایک مسجد میں غنی فجر کی نماز کے بعد اشتعال انگیز تقریریں کرتا تھا۔

قائم پور پولیس کے مطابق غنی کے خلاف ایف آئی آر درج کی گئی تھی جس کے بعد اسے گرفتار کیا گیا تاہم گواہوں اور ثبوتوں کو  مد نظر رکھتے ہوئے عدالت نے 10 سال 4 ماہ قید کی سزا سنائی۔

ایک دوسرے واقع میں اسی جرم میں چار افراد کو قید کی سزا سنائی گئی اور ان کے کتابچے پر پابندی لگا دی گئی ۔

اشتعال انگیز تقریر کرنے پر محمد وقاص نامی شخص کو 110 دن  قید اور 5000 جرمانے کی سزا سنائی گئی۔

ایک دوسری عدالت نے اشتعال انگیز تقریر کرنے پر رفیق احمد کو 105 دن جیل جبکہ 5000 ہزار روپے کا جرمانہ عائد کردیا۔

محمد زاہد نامی شخص کو بھی 105  دن قید اور 3000 ہزار جرمانہ جبکہ متنازعہ مواد پکڑے جانے پر طالب حسین کو تین ماہ قید جبکہ 5000 ہزار روپے جرمانہ عائد کیا گیا ۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں