اقوام متحدہ مسئلہ کشمیر کے حل میں ناکام ہوگئی،بلاول بھٹو زرداری -
The news is by your side.

Advertisement

اقوام متحدہ مسئلہ کشمیر کے حل میں ناکام ہوگئی،بلاول بھٹو زرداری

کراچی: پاکستان پیپلزپارٹی کے سربراہ بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ ایٹمی دھماکوں کے بعد اقوام متحدہ نے پاکستان اور بھارت کیخلاف کسی بھی قسم کی جوہری ٹیکنالوجی ،سامان یا اشیاء کی فراہمی کو ممنوعہ قرار دیااور اب ایک ایک کرکے صرف بھارت کیلئے یہ پابندیاں ہٹائی جارہی ہیں جو امن پسند جمہوری مسلمان ریاست کیخلاف تعصب پر مبنی رویہ ہے جسے کسی صورت بھی برداشت نہیں کیا جائے گا۔

سندھ اسمبلی کے تاریخی ہال میں ماڈل یو این ڈیلی گیٹ سے خطاب کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ 6جون1988کو اقوام متحدہ نے ہر قسم کی جوہری ٹیکنالوجی پر پابندی پاکستان ا ور بھارت پر لگائی تھی جو جوہری دروازے پاکستان اور بھارت کے لئے بند کئے گئے تھے وہ اب ایک ایک کرکے بھارت کیلئے کھولے جارہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ کشمیر کی عوام66برس سے حق کے ارادیت حاصل کرنے کیلئے منتظر ہیں اور یہ بھی ایک حقیقت ہے اقوام متحدہ مسئلہ کشمیر کے حل میں ناکام ہوگئی ہے ۔بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ ہم انصاف پسند ،جمہوریت پسند ہیں عالمی قوانین اور عالمی عدالتوں پر یقین رکھتے ہیں اس صورتحال میں ہماری آواز کو سنا جائے مسلم ریاست کیخلاف اقوام متحدہ کا یہ تعصب پر مبنی رویہ اب مزید برداشت نہیں کیا جاسکتا۔

اپنے خطاب میں بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ ہمارے پاس دو ہی راستے ہیں یا تو ہم پر امن خوشحال اور ترقی پسند ملک بنیں یاپھرایک فسطائتی مملکت بن کر پوری دنیا کیلئے خطرہ بن جائیں۔بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ جس خطے میں ہم رہتے ہیں یہ پہلے سے زیادہ خطرناک بن گیا ہے آج ہم جس راستے کا تعین کریں گے وہ صرف ہمارا خطہ ہی نہیں بلکہ پوری دنیا پر اثر انداز ہوگا۔

انہوں نے اپنے خطاب میں کہا کہ 1980ء میں افغان وار کے دوران روس کیخلاف پوری دنیا نے حصہ لیا مگر اس دوران غیر ریاستی عناصر کو پیسہ اور اسلحہ دیکر ایک انجان غلطی کی گئی جس کی وجہ سے آج پوری دنیا اس وقت کے مجاہدین کو اب دہشت گرد کہتی ہے اور تیس سال سے پاکستان اس کا خمیازہ بھگت رہا ہے ۔

میں یہ بتانا چاہتا ہوں کہ جب غیر ریاستی عناصر کو طاقت دیدی جائے تو وہ کسی قانون کو نہیں مانتے اور نہ ہی ریاست اور عوام کو جوابدہ ہوتے ہیں وہ صرف اپنے مقاصد کیلئے لڑتے ہیں۔

بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ آج پھر مغربی دنیا شام ،لیبیا،مصر میں عرق اسپرنگ مدد کرنے کیلئے چھوٹے اور جلدمقاصد کے حصول کیلئے غیر ریاستی عناصر کو اسلحہ اور پیسے سے لیس کر رہی ہے جو آگے چل کہ پوری دنیا کیلئے اور بھی زیادہ خطرناک ہوجائے گا۔

بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ پاکستان کی آواز کو سننا بہت ضروری ہے میں عالمی برادری سے کہتا ہوں کہ وہ شہید ذوالفقار علی بھٹو اور بے نظیر بھٹوکی پاکستان کی عوام کو سنیں ہمیں ایک جمہوری ، روشن خیال اور ترقی پسند مسلم ملک بننے دیا جائے۔

انہوں نے کہا کہ مذہبی فسطائیت میں میرے نانا اوردوماموں اور میری والدہ کو شہید کردیا گیا آج میری پاک سر زمین کو خون میں نہلا دیا گیا ہے اور یہ آگ پاکستان میں بڑھ رہی ہے عالمی برادری پاکستان کی آواز کو سنیں اور پاکستان کی تاریخ سے سیکھے۔

بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ دہشتگردی کیخلاف،جمہوریت کیلئے مسلسل جدوجہد،کشمیر پر قبضے اور کشمیر میں مظالم کیخلاف اگر عالمی دنیا نے ذوالفقارعلی بھٹو اور بے نظیر بھٹو کی آواز سنی ہوتی تو آج عالمی دنیا میں امن کا خواب ایک حقیقت ہوتا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں