امریکی ایجنسیوں کے غیر قانونی اقدامات کو قانونی شکل دیدی گئی -
The news is by your side.

Advertisement

امریکی ایجنسیوں کے غیر قانونی اقدامات کو قانونی شکل دیدی گئی

امریکی ایجنسیوں کے غیر قانونی اقدامات کو قانونی شکل دے دی گئی، امریکی خفیہ ادارے دوسرے ملکوں کی حکومتوں کے راز جاننے کے لیے اپنی سرگرمیاں بدستور جاری رکھیں گے اور اس عمل پر کسی سے معافی نہیں مانگی جائے گی۔

امریکہ کے صدر باراک اوباما نے امریکی انٹیلی جنس اداروں کی جانب سے اندرون و بیرون ملک جاری نگرانی اور جاسوسی کے پروگراموں میں کئی اصلاحات متعارف کرانے کا اعلان کیا ہے۔

واشنگٹن میں خطاب کرتے ہوئے صدر اوباما نے امریکی خفیہ اداروں کی جانب سے امریکہ کے دوست اور اتحادی ممالک کے سربراہان کی جاسوسی پر پابندی عائد کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ خفیہ معلومات نے دنیا بھر میں دہشت گرد حملوں کی روک تھام میں مدد دی ہے لہذا اسے مکمل طور پر بند نہیں کیا جاسکتا لیکن دوست ممالک کے سربراہان کو یقین دلاتا ہوں کہ ان کی جاسوسی نہیں کی جائیگی۔

امریکی ایجنسیوں کے غیر قانونی اقدامات کو قانونی شکل دیتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ہر اس شخص پر نظر رکھی جائیگی جو امریکہ کے لئے خطرہ ہے جکہ عام افراد کی جاسوسی نہیں کی جائیگی، یاد رہے کہ گزشتہ سال سابق امریکی خفیہ اہلکار ایڈورڈ سنوڈن خفیہ معلومات کا بڑا ذخیرہ لے کر امریکہ سے فرار ہوگئے تھے، جس کے افشا کیے جانے کے بعد امریکہ کو دنیا بھر سے شدید ردعمل کا سامنا کرنا پڑا تھا۔
   

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں