The news is by your side.

Advertisement

آئندہ 24 گھنٹوں میں سیلابی ریلہ سندھ میں داخل ہونے کا امکان

سندھ : آئندہ چوبیس گھنٹوں میں چھ سے آٹھ لاکھ کیوسک کا سیلابی ریلا سندھ میں داخل ہوگا، ضلعی انتظامیہ کے مطابق تمام حفاظتی اقدامات مکمل کرلئے گئے ہیں۔

جنوبی پنجاب میں تباہ کاریاں مچانے کے بعد سیلاب کی بے رحم موجوں کا رُخ اب سندھ کی طرف ہوگیا ہے، محکمہ موسمیات کے مطابق آئندہ چوبیس گھنٹوں کے دوران چھ لاکھ کیوسک کا سیلاب دریائے سندھ، چاچڑاں، کوٹ مٹھن سے گزرے گا جبکہ پندرہ سے سولہ اگست کے درمیان آٹھ سے نولاکھ کیوسک کا سیلاب گڈو بیراج سے گزرے گا۔

سیلاب سے کچے کے علاقوں کے زیرِآب آنے کا خدشہ ہے، اس سلسلے میں تمام حفاظتی اقدامات مکمل کرلئے گئے ہیں۔

ڈی سی او راجن پور کے مطابق کچے کے لوگوں کو محفوظ مقامات کی جانب بھیجا جارہا ہے جبکہ گیارہ فلڈ ریلیف کیمپس آپریشنل کردیئے گئے ہیں۔

سکھرمیں بھی ڈی سی نے مختلف علاقوں کا دورہ کیا،  سکھر کے ضلعی انتظامیہ کے مطابق کچے کے علاقے میں مقیم لوگوں کو علاقہ خالی کرنے کے نوٹسز بھی جاری کردیئے گئے ہیں لیکن رہائشیوں نے تاحال نقل مکانی نہیں کی ہے۔

ذرائع کے مطابق گھوٹکی کے قادرپور لُوپ بند پر اب تک حفاظتی اقدامات مکمل نہیں کئے جاسکے، جس پر وزیرِ اعلیٰ سندھ نے شدید اظہارِ برہمی ظاہر کیا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں