The news is by your side.

Advertisement

آج ممتازشاعرعطا شاد بلوچ کی سالگرہ ہے

آج اردو اور بلوچی کے ممتاز شاعرعطا شاد کا یومِ پیدائش ہے، وہ مجموعی طور پرآٹھ سے زائد تصنیفات کے مصنف ہیں اور حکومتِ پاکستان کی جانب سے دئیے گئے کئی اعزازات کے حامل بھی ہیں۔

عطا شاد 13 نومبر 1939ء کو سنگانی سرکیچ، مکران میں پیدا ہوئے تھے۔عطا شاد کا اصل نام محمد اسحاق تھا- انہوں نے ابتدائی تعلیم تربت سے حاصل کی۔ 1962ء میں پنجاب یونیورسٹی سے گرایجویشن کرنے کے بعد وہ پہلے ریڈیو پاکستان سے اور پھر 1969ء میں بلوچستان کے محکمہ تعلقات عامہ سے بطور افسر اطلاعات وابستہ ہوئے ۔ 1973ء میں وہ بلوچستان آرٹس کونسل کے ڈائریکٹر مقرر ہوئے اورترقی کرتے کرتے سیکریٹری کے عہدے تک پہنچے۔

میں اک غریبِ بے نوا میں اک فقیرِ بے صدا
مری نظر کی التجا جو پاسکو تو ساتھ دو

ان کی اردو شعری مجموعوں میں سنگاب اور برفاگ، بلوچی شعری مجموعوں میں شپ سہارا ندیم، روچ گر اور گچین اور تحقیقی کتب میں اردو بلوچی لغت، بلوچی لوک گیت اور بلوچی نامہ شامل ہیں۔ حکومت پاکستان نے انہیں صدارتی تمغہ برائے حسن کارکردگی اور ستارۂ امتیاز عطا کیا تھا۔

عطا شاد 13 فروری 1997ء کوکوئٹہ میں وفات پاگئے۔

دھوپ کی تمازت تھی موم کے مکانوں پر
اور تم بھی لے آ ئے سائبان شیشے کا

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں