The news is by your side.

Advertisement

بنگلہ دیش کوماضی بھول کر آگے بڑھنا چاہیے، دفترخارجہ

دفترخارجہ نے کہا ہے کہ بنگلہ دیش کو ماضی کو بھول کر آگے بڑھنا چاہیئے، عراق میں ہونے والے بس حملے میں کوئی پاکستانی ہلاک نہیں ہوا۔

ہفتہ وار پریس بریفنگ کے دوران ترجمان دفتر خارجہ تسنیم اسلم نے کہا کہ امید ہے بنگلہ دیش انیس سو چوہترکے معاہدے کے تحت مفاہمت کی پالیسی اپنائے گا، پاکستان کی پارلیمنٹ میں ایک خود مختار ادارہ ہے، پارلیمنٹ میں بنگلہ دیش میں جماعت اسلامی کے لیڈر کو پھانسی دیئے جانے کی مذمتی قرارداد یہ جذبہ ظاہر کرتا ہے کہ بنگلہ دیش کو ماضی کو بھول کر آگے بڑھنا چاہیے۔

پاکستان کی امداد کو نیٹو سپلائی سے مشروط کرنے پر میڈیا کی رپورٹ سے متعلق ترجمان نے کہا کہ امریکا نے اس بارے میں آگاہ نہیں کیا، پاکستان کسی قسم کی شرائط قبول نہیں کرے گا، پاکستان نے بے پناہ قربانیاں دی ہیں اور پاکستان کی نیت پر شک نہیں کیا جانا چاہیے، ترجمان نے کہا کہ عراق میں ہونے والے بس حملے میں کوئی پاکستانی ہلاک نہیں ہوا۔

ترجمان کا کہنا تھا پاک بھارت ڈی جی ایم اوز 24 دسمبر کو ملاقات کرینگے، پاکستان نے تجویز دی تھی کہ ملاقات میں دفتر خارجہ کے حکام بھی شامل ہوں لیکن انہوں نے یہ تجویز نہیں مانی۔
       

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں