The news is by your side.

Advertisement

بھارت مسئلہ کشمیرسمیت دیگر مسائل کے حل کے لئے مذاکرات پرآمادہ

اسلام آباد: بھارت نے مسئلہ کشمیر سمیت تمام مسائل پرآٹھ ماہ سے معطل پاک بھارت مشروط مذاکرات دوبارہ شروع کرنے کی رضا مندی ظاہرکردی۔

تفصیلات کے مطابق مذاکرات کی بحالی کا اعلان بھارتی دفترِخارجہ کی جانب سے کیا گیااور اعلان میں کہا گیا ہے کہ بھارت پاکستان سے براہِ راست اور مشروط مذاکرات کرے گا۔

اعلامیے میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ پاک بھارت مذاکرات کشمیری رہنماؤں کے بغیر ہوں گے اورپاکستان سے بات چیت کے لئے حریت رہنماوٗں کا سہارا نہیں لیا جائے گا۔

واضح رہے کہ وزیراعظم نواز شریف کہہ چکے تھے کہ پاک بھارت مذاکرات بھارت نے ختم کئے تھے اوراب بھارت ہی مذاکرات کا سلسلہ دوبارہ شروع کرے گا۔

پاکستان اوربھارت کے درمیان مسئلہ کشمیر اورآبی ذخائرسمیت کئی معاملات تصفیہ طلب ہیں جن کے سبب دونوں ممالک خطے میں روایتی حریف کے طورپرجانے جاتے ہیں۔

مسئلہ کشمیر ان تمام مسائل میں سب سے اہم ہے کیونکہ پاکستان تقسیمِ ہند کے اکثریتی فارمولے کے تحت کشمیرکا حقیقی دعوے دارہے اور کشمیری عوام بھی پاکستان کے ساتھ ہی الحاق چاہتے ہیں لیکن بھارت اسے اپنا اٹوٹ انگ قراردیتا ہے۔

بھارت میں ہندو قوم پرست جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی کے اقتدار میں آنے کے بعد پاک بھارت تعلقات ایک بارپھرسرد مہری کا شکار ہوگئے تھے اور تقریباً آٹھ ماہ سے دنوں ممالک میں مذاکرات کا سلسلہ معطل تھا۔


پاک بھارت سیکریٹریز کی ملاقات 


گزشتہ دنوں اسلام آباد میں سارک ممالک کے خارجہ سیکریٹریز کی ملاقات کے فورم پردونوں ممالک کے سیکرٹیریز کی ملاقات کے بعد ایک بارپھردونوں ممالک کے تعلقات نرمی روی کی راہ پرگامزن ہوگئے ہیں۔

بھارتی سیکرٹری خارجہ جے شنکر نے وطن واپس جاکر بھارتی میڈیا کو پاک بھارت مذاکرات سے متعلق مثبت اشارے دئیے تھے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں