The news is by your side.

Advertisement

بھارت میں بزرگ خاتون کو چڑیل قرار دے کرقتل کردیا گیا

نئی دہلی : بھارتی ریاست آسام کے ایک گاوٗں میں دیہاتیوں نے 63 سالہ بزرگ خاتون کا سربغدے سے قلم  کردیا، دیہاتیوں کا ماننا ہے کہ مذکورہ خاتون جادوگرنی تھی۔

ذرائع کے مطابق بھارتی پولیس نے سات افراد کو مونی اورنگ نامی پانچ افراد کی بزرگ ماں کو ایک مقامی پجاری کے کہنے میں آکرقتل کیا۔

حملہ آور بغدوں اور آگ لگانے کے سامان سے مسلح تھےانہوں نے خاتون کو گھر سے بزورِ قوت نکالا اور بے رحمی سے سر تن سے جدا کردیا۔

پولیس کے مطابق خاتون کا سر جدا کر کے ان کے ہاتھ پاؤں قطع کیے گئے اور اس کے بعد ان کی لاش کو آگ لگادی۔

گرفتاریوں کے خلاف دیہاتیوں نے تھانے کا گھراؤ کرلیا، ان کا مطالبہ تھا کہ  مونی ایک جادوگرنی تھی  جوکہ اپنے دشمنوں پر جادوئی منترپھونکا کرتی تھی۔

ایک مقامی شخص کے مطابق مونی کے ساتھ جو کچھ ہوا ٹھیک ہوا  کیونکہ وہ ایک جادوگرنی تھی اور ان کے گاؤں میں ایسے کسی شخص کی کوئی جگہ نہیں ہے۔

 دوسری جانب مقتولہ شوہرکا کہناہے کہ ان کی بیوی بےقصورہےانہوں نے پجاری کو واقعے کے ذمہ دار قرار دیا جس نے ان کی بیوی کے بارے میں شکوک پیدا کیےاور عوام کو اکسایا۔

بھارت کے قبائلی سماج میں جادو پر یقین رکھنے والوں کی بڑی تعداد موجود ہے اورکچھ عرصہ قبل بھارتی ریاست جھاڑ کنڈ نے اس قسم کی کاروائیوں کی روک تھام کے لئے خصوصی قوانین وضع کئے ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں