The news is by your side.

Advertisement

بھارت میں غذائی قلت خطرناک حد تک جا پہنچی

نئی دہلی: نئی تحقیق سے سامنے آیا ہے کہ بھارت میں 10 لاکھ بچے غذائی قلت کے باعث موت کی آغوش میں چلے جاتے ہیں۔

راجھستان کے علاقے باران اورمدھیہ پردیش کے علاقے میں کی جانے والی تحقیق کے مطابق بھارت کے پسماندہ علاقوں میں پانچ سال سے کم عمر دس لاکھ بچے غزائی قلت کے سبب مرجاتے ہیں۔

اقوامِ متحدہ کے ادارے یونیسف نے ان اعدادو شمار کی تصدیق کرتے ہوئے صورتحال کو گھمبیر قرار دیا ہے اور کہا ہے کہ غذائی قلت کو دور کرنے کے لئے جنگی بنیادوں پرڈبلیو ایچ او کے مقررکردہ معیارات کو نافذ کرنا ہوگا۔

اے سی ایف انڈیا کے مطابق بھارت میں غذائی قلت سے متاثرہ بچوں کی شرح جنوبی ایشیا کے کسی بھی ملک سے بہت زیادہ ہے۔

واضح رہے کہ یہ رپورٹ بھارت کی 29 ریاستوں میں سے صرف دو ریاستوں کے اعداد و شمارپرمبنی ہے اور اس کی روشنی میں اندازہ لگایا جاسکتا ہے کہ ہندوستان میں غذائی قلت سے متاثرہ بچوں کی شرح کیا ہوگی۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں