site
stats
اہم ترین

پنجاب پولیس کا پی ٹی آئی اور پی اے ٹی کارکنان کیخلاف کریک ڈاؤن

پنجاب: پولیس نے تحریکِ انصاف کے جشن کو روکنے کیلئے سینکڑوں کارکنان کو گرفتار کرلیا ہے، دوسری جانب عوامی تحریک نے بھی کارکنان کی گرفتاریوں کیخلاف حکومت سے مذاکرات معطل کردیئے ہیں۔

تحریکِ انصاف کے جشن کو روکنے کیلئے کارکنان کے خلاف کریک ڈاؤن جاری ہے، راولپنڈی میں دو روز کیلئے دفعہ ایک سو چوالیس نافذ کرکے ڈبل سواری پر پابندی عائد کردی گئی ہے جبکہ مختلف علاقوں سے پی ٹی آئی کے سینکڑوں کارکنان کو گرفتار کرلیا ہے۔

اسلام آباد جانے والی تمام رابطہ سڑکوں کوکنٹینر لگا کربند کر دیا گیا ہے، جس سے شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔

لاہور پولیس نے بغیر وارنٹ چھاپہ مار کرتحریکِ انصاف پنجاب کے ڈپٹی سیکریڑی اطلاعات اشتیاق ملک سمیت متعدد کارکنان کو حراست میں لے لیا ہے۔ میانوالی سے پی ٹی آئی اور پی اے ٹی کے ڈیڑھ سو سے زائد کارکنوں کو حراست میں لیا گیا ہے۔

پی ٹی آئی پنجاب کے صدر اعجاز چوہدری نے دعویٰ کیا ہےکہ صوبے بھر سے دو ہزار سے زائد کارکن گرفتار کیے گئے ہیں، اسی طرح کوئٹہ سے آنے والے پی ٹی آئی کے چالیس گاڑیوں کے قافلے کو ڈیرہ اسماعیل خان کے مقام پر روک دیا گیا ہے، انکا کہنا تھا کہ گرفتاریوں کے باوجود لوگ اسلام آباد پہنچیں گے۔

دوسری جانب پولیس نے مبینہ طور پر سرکاری ٹی وی پر حملے کیخلاف ایکشن کرتے ہوئے پی اے ٹی کے درجنوں کارکنان کوحراست میں لے لیا ہیں، کارکنوں کی گرفتاریوں پر پی اے ٹی نے حکومت سے مذاکرات معطل کرنے کا اعلان کردیا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top