site
stats
آزادی مارچ

جمعہ کو اسلام آبادمیں سب سےبڑاعوامی سمندر ہوگا، عمران خان

اسلام آباد:عمران خان نے کہا ہے کہ میں نے کبھی ہارنہیں مانی ہےاور نہ مانوں گا نواز شریف کے استعفے کے بغیر نہیں جاؤں گا ۔

اسلام آباد میں آزادی دھرنے سے خطاب میں پاکستان تحریکِ انصاف کے چیئرمین عمران خان کا کہنا تھا کہ ہمارے دھرنے کو لندن  پلان کہتے ہیں انہوں نے کہا 43 دن دھرنے کا پلان کوئی احمق ہی بنا سکتا ہے،ہمارا پلان لندن میں نہیں بنا 18سال پہلے بنا تھا  میثاقِ جمہوریت اصل لندن پلان تھااورلندن پلان کا دوسرا حصہ الیکشن میں دھاندلی تھا۔

انہوں نے کہا کہ نواز شریف اور آصف زرداری میں مک مکا ہے میں ایک ہی گیند سے نواز اور زرداری کی وکٹیں گراوٗں گا، ڈاکوں نے مل کر نیب کا چیئرمین لگایا ہے،عبوری حکومت دونوں نے مل کر بنائی، دونوں پارٹی قائدین پرکرپشن کے کیسزز ہیں۔

عمران خان نے کہا کہ آصف زرداری مانتے ہیں کہ آر- اوز کا الیکشن تھا، پیپلز پارٹی نے سندھ میں دھاندلی کی ہے، آصف زرداری کا 60 ملین سوئٹزرلیند میں ہے، ہرپاکستانی ایک لاکھ کا مقروض ہے، 11کروڑ پاکستانیوں کو غربت سے نکالنا ہے ۔

ان کا کہنا تھا کہ وزیرِاعظم بتائیں عوام کا پیسہ کہاں جارہا ہے؟ ٹیکس چوری ختم ہوگی تو ملک ٹھیک ہوجائے گا، جب دونوں جماعتیں باریاں لیتی رہیں گی کرپشن ختم نہیں ہوسکتی، نواز شریف نے کئی سال تک ٹیکس نہیں دیا ۔

انہوں نے کہا کہ بذدل لوگ بڑا کام نہیں کرسکتے، دلیر قومیں بڑی مصیبتوں کا مقابلہ کرتیں ہیں، غریبوں کا بھی سوچنا ہوگا، نئے پاکستان میں میرٹ ہوگا ، خاندان کی حکومت نہیں ہوگی، پاکستان کو دو حصوں میں تقسیم کیا گیا ہے، کیا شریف خاندان کو اپنے علاوہ کوئی اور نہیں ملتا؟ ۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ پی آئی اے اپنے رشتہ داروں کے ہاتھ میں دے دی گئی ہے، نئے پاکستان میں گلو بٹوں کو نہیں لائیں گے، اچھے ذہن والوں کو واپس پاکستان لانا ہے، نئے پاکستان میں پولیس اور جج کو زیادہ تنخواہیں دیں گے، پاکستان کو ایک فلاحی ریاست بنائیں گے ۔

خطاب کے اختتام میں عمران خان کا کہنا تھا کہ جمعہ کو اسلام آباد میں سب سے بڑا جلسہ ہوگا،انہوں نے لاہور جلسے کے حوالے سے کہا کہ لاہور تیار ہوجاؤ ، جو بھی ظلم سے نا انصافی سے تنگ ہے، جو بھی مہنگائی سے تنگ ہے گھر بیٹھنے سے کچھ نہیں ملے گا،سب مینارِ پاکستان پہنچ جائیں ۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top