site
stats
اہم ترین

حکمران 30نومبر کو صبرو تحمل سے کام لیں، الطاف حسین

کراچی: ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین نے کہا ہےکہ وزیر اعظم ، وزیر اعلیٰ پنجاب اور وفاقی وزارا تیس نومبر کو صبر و تحمل کا مظاہرہ کریں۔

الطاف حسین کا کہنا تھا کہ سندھ کوانتظامی یونٹ کی طرح بانٹ دیاجائیگا، کچھ وزرانےکہا حیدرآبادمیں یونیورسٹی نہیں بنےگی گورنرسندھ نےحیدرآبادکےعوام کی خواہش پوری کی آصف زرداری نےبخوشی یونیورسٹی کی اجازت دی ملک ریاض حیدرآبادکےعوام کیلئےرحمت کا فرشتہ بن کر آئے آج تک کوئی اردو بولنےوالاسندھ کاوزیراعلیٰ نہیں بنا کوٹاسسٹم ختم کرکے50 ,50فیصدکاسسٹم نافذکرینگے وڈیرے،جاگیر داردیہات میں اسکول نہیں بننےدیتے

الطاف حسین نے کہا کہ ہر کسی کو اس کا جائز حصہ ملنا چاہیے، سندھیوں کو آج تک چالیس فیصد حصہ نہیں ملا، کوئی اردو بولنے والا وزیراعلیٰ بھی نہیں بنا، سندھ میں پرانا کوٹہ سسٹم ختم کرکے پچاس، پچاس فیصد کوٹہ سسٹم نافذ کریں گے، سندھ تقسیم نہیں ہوگا بلکہ انتظامی یونٹس بنائیں گے۔

 الطاف حسین نے کہا کہ جو کام بحریہ ٹاؤن کے سربراہ نے کیا ہے کاش وزیراعلیٰ سندھ یا ان کی حکومت کرتی لیکن متعصب وزراء نے کہا کہ حیدر آباد میں یونیورسٹی نہیں بن سکتی۔ اللہ تعالی نے ملک ریاض کو فرشتہ بنا کر بھیجا ہے ان کے اعلان سے سڑسٹھ سال بعد دیرینہ خواہش پوری ہوگئی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top