The news is by your side.

Advertisement

حکومت فضل الرحمان کو اکیسویں آئینی ترمیم پرمنانے میں ناکام

اسلام آباد: فضل الرحمان کا کہناہے پرویز مشرف چوہدری نثا ر سے بہتر تھے، سابق صدر نے صرف دو فیصد مدرسوں سے متعلق تحفظات کااظہارکیاتھا۔

قومی اسمبلی کے باہر میڈیا سےگفتگومیں مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ ان کی تجاویز کو شامل نہ کیا گیا تو وہ اکیس ویں ترمیم پر رائے شماری میں حصہ نہیں لیں گے۔

اس سے قبل قومی اسمبلی سے خطاب میں مولانا فضل الرحمٰن کا کہنا تھا کہ وزیر داخلہ نے نوے فیصد مدارس کیخلاف ایف آئی آرکٹوا دی ہے ان سے اچھے تو پرویز مشرف تھے جنہوں نے دو فیصد مدارس کو غلط کہا تھا، انکا کہنا تھا کہ یکجہتی کامظاہرہ نہ کیاتوپارلیمنٹ کااتفاق متنازع اور لوگ باہرآجائیں گے، مدارس سے متعلق شدید رد عمل آرہا ہے۔

 اس سے قبل پریس کانفرنس میں مولانا فضل الرحمن کا کہنا تھا کہ انہوں نےاے پی سی میں بتا دیا تھا وہ اصولی طور پر ہم فوجی عدالتوں کے حق میں نہیں ،صرف قومی اتفاق رائے کیلئے فوجی عدالتوں کی حمایت کی، مولانافضل الرحمان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم نے مسودہ تیار کرنے میں اپوزیشن کوساتھ اور جے یو آئی کو بے خبررکھا ، اکیسو یں آئینی ترمیم پر مولانا فضل الرحمان سے وفاقی وزراء اسحٰق ڈار اور پرویز رشید کی ملاقات بے نتیجہ رہی،ملاقات اب منگل کو ہوگی۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں