site
stats
پاکستان

حکومت نے عمران فاروق قتل کیس کی تحقیقاتی کمیٹی کے دوارکان کو تبدیل کردیا

اسلام آباد: ایم کیو ایم رہنما ڈاکٹر عمران فاروق کے قتل کیس کی تفتیش کے لیے بنائی گئ تحقیقاتی ٹیم میں ایک بار پھر تبدیلی کر دی گئی،نئی تحقیقاتی ٹیم کا نوٹیفیکیشن حکومت نے جاری کر دیا۔

لندن میں قتل ہونے والے ایم کیو ایم کے رہنما کے قتل کیس کی مشترکہ تحقیقاتی ٹیم میں ایک بار پھر تبدیلی کر دی گئی، قتل کیس کی تفتیش کے لیے حکومت نے مشترکہ تحقیقاتی کمیٹی تبدیل کر کے نوٹی فکیشن جاری کردیا۔

نوٹی فیکیشن کے مطابق عمران فاروق قتل کیس کی مشترکہ تحقیقاتی کمیٹی کے سربراہ ڈائریکٹر انسداددہشتگردی ونگ ایف آئی اے مظہر الحق کاکا خیل ہوں گے۔

پانچ رکنی تحقیقاتی کمیٹی میں ایڈیشنل ڈائریکٹر ایف آئی اے الطاف حسین کی جگہ ایڈیشنل ڈائرکٹر ایف آئی اے انسداددہشتگردی ونگ شہاب عظیم کا نام شامل کر دیا گیا،ایس پی اسلام آباد پولیس اور ایس آئی یو کے کیپٹن ریٹائرڈ الیاس کی جگہ ڈی ایس آر سندھ ونگ راجا طاہر اقبال کا نام شامل کر دیا گیا،مشترکہ تحقیقاتی کمیٹی میں آئی ایس آئی اور انٹیلی بیوور کے نمائندے شامل ہیں۔

ایم کیو ایم رہنماعمران فاروق کو مارنے کی سازش تیار کرنے والے تین مبینہ ملزمان کوراولپنڈی کی عدالت میں پیش کیا گیا۔ عدالت نے ملزمان کو چودہ روزہ ریمانڈ پر ایف آئی اے کے سپردکردیا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top