دانتوں میں کیڑا لگنے کا تعلق ہماری روزمرہ کی خوراک سے ہے -
The news is by your side.

Advertisement

دانتوں میں کیڑا لگنے کا تعلق ہماری روزمرہ کی خوراک سے ہے

طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ دانتوں میں کیڑا لگنے کا تعلق ہماری روزمرہ کی خوارک سے ہے۔

تحقیق کار ڈاکٹر ویسٹن پرائس کا کہنا ہے کہ اگر کھانے میں لحمیات، منرلز، وٹامن اور غذائیت کم ہو تو ہماری ہڈیاں اور دانت کمزور ہونا شروع ہوجاتے ہیں، خون میں کیلشیم اور فاسفورس کا تناسب خراب ہوجاتا ہے جبکہ بیکٹیریا ان کمزوریوں کی وجہ سے حملہ آور ہوتا ہے اور دانتوں میں کیڑا لگ جاتا ہے۔

اس کا کہنا ہے کہ ہمیں اپنی روزانہ کی خوارک میں چند بنیادی تبدیلیاں کرنی ہوں گی یعنی کھانے میں ناریل کا تیل، گوشت، ڈیری، سی فوڈ کا استعمال کرے تو یہ بہت مفید ہے۔

برطانیہ میں برٹش ڈینٹل جرنل کی ایک تحقیق کے مطابق دانتوں کے کیڑا لگنے کی بڑی وجہ کوک جیسے مشروبات ہیں۔ اس طرح دانت گرنے کا خطرہ بارہ برس کے بچوں میں انسٹھ فی صد ہے اور چودہ برس کے بچوں میں یہی خطرہ دو سو بیس فی صد تک پہنچ جاتا ہے۔

ریسرچ سے ثابت ہوا کہ چھوٹے بچوں کے دانتوں میں کیٹرا لگنے کی وجوہات میں ماﺅں میں غذائیت کی کمی،چاکلیٹ،میٹھی ڈرنگ استعمال زیادہ کرنا، دانت صاف نہ کرنا سمیت دیگر بھی ہیں۔

برطانوی سافٹ ڈرنکس ایسوسی ایشن کا کہنا ہے کہ جو لوگ کوک یا اس جیسی دوسری مشروبات پیتے ہیں، انہیں چاہیے کے وہ دن میں دو بار فلورائیڈ والے ٹوتھ پیسٹ سے دانت صاف کیا کریں۔ ساتھ ہی یہ بھی کہنا ہے کہ دودھ پینے والے بچوں کو بوتلوں میں کوک یا پھلوں کا شربت دینے سے بھی پرہیز کیا جانا چاہیے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں