دو پاکستانی ایشیا 21 ینگ لیڈرکلاس کا حصہ بن گئے -
The news is by your side.

Advertisement

دو پاکستانی ایشیا 21 ینگ لیڈرکلاس کا حصہ بن گئے

دنیا بھرمیں پھیلے ہوئے پاکستانیوں کا سراس وقت فخرسے ہوگیا جب نیویارک میں واقع ایشیا سوسائٹی نے ایشیا 21 ینگ لیڈرکلاس2015 کا حصہ بننے کے لئے دو پاکستانیوں کو چن لیا۔

پاکستان کے یہ ہونہارسپوت محسن علی مصطفیٰ اور محمد صابر ہیں جنہیں یہ اعزاز ملا ہے کہ سال 2015 کی اس کلاس کا حصہ بنیں جس میں بنگلہ دیش، نیپال، ایران، تھائی لینڈ اور بھارت سمیت دنیا کے کئی ملکوں سے آئے افراد ہوں گے۔

ایشیا 21 ینگ لیڈر آج سے 10 سال قبل شروع کیا گیا تھا اورآج اس کے نیٹ ورک میں 30 ممالک سے 800 نوجوان رہنماء شامل ہیں۔

ایشیا 21 ینگ لیڈرز کے لئے افراد کا انتخاب انتہائی مشکل مراحل سے گزرکرہوتا ہے۔

محسن علی پیشے کے لحاظ سے ڈاکٹرہیں اورامن ہیلتھ کیئرسروسز سے وابستہ ہیں اوروہ کراچی، مڈل ایسٹ، نارتھ افریقہ اور جنوبی ایشیا کے لئے ڈیزاسٹرمینجمنٹ فریم ورک تیار کررہے ہیں۔ انہوں نے 11000 افراد کو جان بچانے کی بنیادی تربیت اور ابتدائی طبی امداد کی تربیت بھی دی ہے۔

محسن علی مصطفیٰ – تصویر بشکریہ فیس بک

دوسرے پاکستانی محمد صابرہیں جنہوں نے سلم آباد نامی ایک آرگنائزیشن قائم کی ہے جس کا مقصد کچی آبادیوں میں رہنےوالے بچوں تک زندگی کی آسائشیں پہچانا اور ان کو تندرست رکھنے کی خاطر ان کے لئے صحت و صفائی کی بنیادی ضروریات مہیا کرنا ہے۔ اس سے قبل وہ خودی پاکستان اور ہیومن رائٹس کمیشن آف پاکستان کے ساتھ بھی کام کرتے رہے ہیں۔

محمد صابر – تصویر بشکریہ فیس بک

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں