site
stats
آزادی مارچ

دھاندلی کی تفتیش اگر ماڈل ٹاون جیسی کرانی ہے تو ہمیں ان پر اعتماد نہیں، عمران خان

اسلام آباد: عمران خان نے کہا کہ دھاندلی اور ٹرپل 1 بریگیڈ سے آنے والوں میں کوئی فرق نہیں ہے۔

اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کا کہنا تھا کہ تحریک انصاف وہ واحد جماعت ہے جو انصاف مانگ رہی ہے، نواز شریف کے احتساب پر ہمیں کوئی اعتبار نہیں ہے ، 2013 کے الیکشن میں 55 لاکھ اضافی بیلٹ پیپرز چھاپے گئے، اضافی بیلٹ پیپرز مخصوص حلقوں میں پہنائے گئے۔

دھاندلی کے طریقہ کار کی تفصیلات پر رپورٹ جاری کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ سمجھ نہیں آرہی ن لیگ کو ڈیرھ لاکھ ووٹ کیسے ملے، جس سے پتا چل گیا کہ بڑی دھاندلی ہوئی ہے، افتخار چوہدری سے کہا تھا کہ 4 حلقے کھول دو مجھے نہیں پتا تھا کہ اوہ بھی دھاندلی کا حصہ ہیں، افتخار چوہدری بھی دھاندلی کا حصہ تھے، افتخار چوہدری نے میچ فکس کرانے میں اہم کردار ادا کیا ۔

انہوں نے کہا کہ پنجاب سندھ میں پی ٹی آئی کے کارکنان پر ایف آئی آر کاٹی گئی ہیں، اس الیکشن میں تفتیش نہ کی گئی تو آئندہ الیکشن میں دھاندلی کا مقابلہ ہوگا، سخت قوانین کے بعد بھی کراچی میں ٹارگٹ کیلنگ ہورہی ہے، ٹارکٹ کیلنگ میں 15 ہزار افراد مارے گئے کسی کو سزا نہیں ملی، صاف اور شفاف الیکشن کے بغیرملک میں جمہوریت نہیں آئے گی ۔

کپتان کاکہنا تھا کہ ہمیں کہا گیا کہ 4 ماہ میں انصاف مل جائے گا ، لیکن ہمیں کچھ نہ ملا، انصاف کے لئے ہم نے ایک سال تک انتظار کیا، جمہوریت کو اضافی بیلیٹ پیپرز چھپوانے والوں نے نقصان پہنچایا ہے،ان کا کہنا تھا کہ مجھے بتائیں دو نمبر آدمی اسملبی میں جاکر ایماندار کیسے ہوسکتا ہے؟ نواز اور زرداری ٹیکس چور ہیں جب تک یہ موجود ہوں گے ٹیکس چوری ختم نہیں ہوسکتی، آصف زرداری نے خود کہا تھا کہ آروز کا الیکشن ہے، دھاندلی کی تحقیق میں آروز سے بھی پوچھا جائے۔

اسلام آباد دھرنے کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ 30 نومبر کو بتائیں گے اگلا لائےرعمل کیا ہوگا ،انہوں نے کہا کہ دھاندلی کی تفتیش اگر ماڈل ٹاون جیسی کرانی ہے تو ہمیں ان پر اعتماد نہیں ہے ۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top