site
stats
اے آر وائی خصوصی

”دی رائٹ مین۔۔۔الطاف حسین“

تحریر :    راﺅ محمدخالد

امریکی جریدے ”نیوزویک“ نے پاکستان کی پڑھی لکھی مڈل کلاس‘ خواتین اور اقلیتوں کی نمائندہ جماعت متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیوایم) کے بانی وقائد الطاف حسین کو ”دی رائٹ مین“ کا خطاب دیا ہے جو الطاف حسین کی سیاسی دانش مندی،بصیرت اور بے مثل جدوجہد کا اعتراف ہے اور الطاف حسین کی عالمی سطح پر پذیرائی نے پاکستان اور پاکستانیوں کو اقوام عالم میں سرخروکیا ہے۔

پاکستان کی جغرافیائی پوزیشن ایسی ہے کہ دنیا کے آئندہ100سال کا فیصلہ اسی خطہ میں ہونا ہے اور پاکستان کا کردارنہایت اہمیت کا حامل ہے۔2014ءکا سال پاکستان کیلئے میک یا بریک کا سال ثابت ہو سکتا ہے۔

newsOfTheWeekAH

ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین نے پاکستان کو ہر قسم کی مذہبی انتہا پسندی سے پاک کرنے کیلئے رواداری اور برداشت کا درس دیا ہے اور پوری جرات اور بہادری کے ساتھ بدنام زمانہ دہشت گردوں طالبان کو بے نقاب کیا ہے، طالبان نے ایم کیو ایم کے کارکنان اور منتخب نمائندوں کو ٹارگٹ کر کے قتل کیا ہے،گذشتہ دنوں پنجاب سے ایم کیو ایم کی رکن قومی اسمبلی طاہرہ آصف کو شہید کر دیا گیاپرظلم وجبر کا کوئی ہتھکنڈہ الطاف حسین کے پیغام حق پرستی کو پھیلنے سے نہیں روک سکتا۔

الطاف حسین تمام پاکستانیوں کو برابر کا پاکستانی اور مساوی حقوق کا حقدار تسلیم کرانا چاہتے ہیں اور پاکستانی معاشرے میں خواتین کو فعال اور باوقار مقام دلوانا چاہتے ہیں،الطاف حسین کچلے ہوئے،محروم اور پسے ہوئے طبقے کے لوگوں کو بھی باعزت زندگی کا حق دلوانا چاہتے ہیں۔

انسانیت اور اسلام کے دشمن طالبان عناصر پاکستان کے مختلف شہروں میں اپنی محفوظ پناہ گاہیں بنا رہے ہیں ، کراچی میں اربوں روپے کا بھتہ وصول کر رہے ہیں اور سنگین جرائم،چوری،ڈکیتی،قتل، اغوا برائے تاوان میں بھی ملوث ہیں،طالبانائزیشن کو سپورٹ کرنے والے عناصر دراصل بانی پاکستان محمدعلی جناح کے پاکستان کو ایک ناکام اور دہشت گرد ریاست ثابت کرنے پر تلے ہوئے ہیں۔

پاکستان آرمی شمالی وزیرستان میں دہشت گردوں کے خاتمہ کیلئے پاکستان کی بقاءکی جنگ آپریشن ضرب عضب میں مصروف عمل ہے،پوری قوم مسلح افواج کی قربانیوں کی قدر کرتی ہے اور اپنے بہادربیٹوں پر فخر کرتی ہے جو ملک کی سلامتی کیلئے کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کر رہے، ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین نے ملکی دفاع کیلئے ایم کیو ایم کے لاکھوں کارکنان کو مسلح افوان کے شانہ بشانہ پیش کرنے کا اعلان کر کے کروڑوں محب وطن پاکستانیوں کے دل جیت لئے ہیں، پنجاب میں لوگ الطاف حسین کی جذبہ حب الوطنی کو قدر کی نگاہ سے دیکھ رہے ہیں ۔

ایم کیو ایم کا شعبہ خدمت خلق فاﺅنڈیشن دکھی انسانیت کی خدمت میں مصروف عمل ہے،قومی سطح پر کے کے ایف کی خدمات نہایت اہمیت کی حامل ہیں،2005ءمیں آزادکشمیر،اسلام آباد ،خیبرپختونخواہ کے زلزلہ میں متاثرہ لوگوں کی کے کے ایف کے رضاکاروں نے دن رات خدمت کی شاندار مثال قائم کی ہے،2010ءکے سیلاب زدگان کی مدد کیلئے خدمت خلق فاﺅنڈیشن کے رضاکاروں ،ایم کیو ایم کے ذمہ داران اور ارکان اسمبلی نے دن رات بھرپور محنت کی اور جنوبی پنجاب کے متاثرہ علاقوں میں کشتیوں کے ذریعے سیلاب زدگان تک امدادی سامان پہنچایا اور عید کے دن مصیبت زدہ لوگوں کے ساتھ گزار کر عصرحاضر کی تاریخ میں ایک نئی مثال رقم کی۔

افغان جنگ کے بعد مسلح گروپس نے پاکستانی معاشرے کو یرغمال بنا کر عدم استحکام کا شکار کیا ہوا ہے اب پاکستان کے پالیسی میکرز نے طے کر لیا ہے کہ ان شرپسند عناصر کا خاتمہ کیے بغیر ریاست پاکستان کو انٹرنیشنل کمیونٹی میں موثر کردار نہیں دلوایا جا سکتا، اب پاکستان آرمی ملک دشمن عناصر کے خلاف پوری جرات،بہادری اور صلاحیت کے ذریعے آپریشن ضرب عضب کر رہی ہیں،بدقسمتی سے ہمارے ملک کی سیاسی پارٹیاں طالبان عناصر کیلئے سافٹ کارنر رکھتی ہیں یہی وجہ ہے ایک سال تک ان دہشت گردوں سے ”مذاق رات “کا ڈرامہ چلتا رہا اس دوران طالبان عناصر نے اپنی پوزیشنیں تبدیل کر لیں اور نئی محفوظ پناہ گاہوں میں منتقل ہو گئے۔

آج ملک کی سیاسی صورتحال یہ ہے کہ بھاری مینڈیٹ کے دعویداروں کے غبارے میں ہوا نکل چکی ہے ،نواز حکومت ہر شعبہ زندگی میں بُری طرح ناکام ہو چکی ہے،عام آدمی کی زندگی اجیرن بنی ہوئی ہے،انڈسٹری تباہ ہے توانائی کا بدترین بحران ہے اور ”رائیونڈکے حکمران“ جنوبی پنجاب میں ٹارگٹڈ لوڈ شیڈنگ کر رہے ہیں۔

فرسودہ نظام کی تبدیلی اور آزادری کے حصول کیلئے سخت حالات سے گزرنا پڑتا ہے، مشکلات برداشت کرنی پڑتی ہیں اور لازوال قربانیوں کی تاریخ رقم کرنا پڑتی ہے،آگ اور خون کے دریا عبور کرنے پڑتے ہیں لیکن ہمارے ملک میں ”تبدیلی کے علمبردار“ میوزیکل نائٹس کر کے آزادی مارچ کر رہے ہیں،اگر ناچ گانے سے آزادی ملتی تو ”اداکاروں،فنکاروں اور رقاصاﺅں “کا علیحدہ ملک ہوتا۔

پاکستان کے سماج میں خرابی کی سب سے بڑی وجہ وسائل کی غیرمنصفانہ تقسیم اور فاضل دولت ہے، رزق کے سرچشموں پر دو فیصد جاگیردار ،وڈیرے ،سردار اور صنعتکار قابض ہیں،98فیصد عوام بنیادی ضروریات زندگی سے محروم ہیں،تبدیلی کے آسمان سے فرشتے نہیں اُتریں گے بلکہ وسائل کی چکی میں پسنے والے عوام کو اپنے اندر سے قیادت نکالنا ہو گی۔

الطاف حسین پاکستان اور کروڑوںپاکستانیوں کے نجات دہندہ ہیں،الطاف حسین کا جنم دن 17ستمبرحق پرستوں کیلئے ایک عالمی تہوار کی حیثیت رکھتا ہے،الطاف حسین کی انقلابی جدوجہد نیلسن منڈیلا کی طرز پر اور سماجی خدمات مدرٹریسا کی طرز پر ہیں، الطاف حسین کا مشن پاکستان کی بقائ، سلامتی ، استحکام اور خوشحالی ہے،تمام محب وطن قوتوں کو آگے بڑھ کر الطاف حسین کا ساتھ دینا چاہیے،الطاف حسین ہی سنگین مسائل میں گھرے ہوئے پاکستان کی کشتی کو کنارے لگا سکتے ہیں اور پاکستان کو نیا اورروشن مستقبل دے سکتے ہیں اور پاکستان کو ایک ایسا پاکستان بنا سکتے ہیںجو انٹرنیشنل کمیونٹی میں باوقار مقام کا حامل ہواوراقوام عالم پاکستان کو ایک ذمہ دار ،خوشحال اورترقی یافتہ ریاست تسلیم کر لیں،الطاف حسین سے محبت پاکستان سے محبت ہے۔
٭٭٭٭٭

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top