The news is by your side.

Advertisement

زیرِحراست کارکنوں کا قتلِ عام بند کیا جائےِ، حیدرعباس رضوی

کراچی :ایم کیوایم کے کارکن کی پولیس حراست میں ہلاکت کے خلاف حیدرعباس رضوی نے سندھ پولیس کے اعلیٰ حکام کو متنبہ کیا ہے کہ کارکنوں کا قتلِ عام بند کیا جائے۔

ہفتے کی شام متحدہ قومی موومنٹ کے رہنماء اوررکن قومی اسمبلی حیدر عباس رضوی نے صحافیوں سے گفتگوکرتے ہوئے بتایا کہ فراز عالم نامی کارکن کو پولیس نے دورانِ تفتیش قتل کیا اورتشدد نہ کرنے کے لئے اہلِ خانہ سے لاکھوں روپے طلب کرتے رہے۔

فراز عالم نامی نوجوان کو چند روز قبل کھوکھرا پار تھانے کے عملے نے علاقے کی مسجد سے حراست میں لیا تھا دو روز قبل اسے عدلت میں پیش کرکے مزید دو دن کا ریمانڈ طلب کیا گیا جسے منظورکرلیاگیا۔

مقتول کے ماموں نے میڈیا کوبتایا گیا مقتول پر بدترین تشدد کیا جارہا تھا اس نے عدالت میں اپنے زخموں کے نشان جج کو دکھائے پھربھی عدالت نے مزید دوروز کا ریمانڈ دے دیا، انہوں نے مزید کہا کہ پولیس والوں نے مقدمہ ختم کرنے کے لئے دس لاکھ روپے رشوت طلب کی لیکن ہماری اتنی استطاعت نہیں تھی، پھرپیشی کے موقع پرریمانڈ نہ لینے کے لئے 10 ہزار روپے مانگے۔

ایم کیو ایم کے رہنماء حیدر عباس رضوی نے پولیس کی جانب سے رشوت طلب کرنے کے ثبوت میڈیا کو دکھائے اورکہا کہ کراچی پولیس بھتہ مافیا بنی ہوئی ہے۔

انہیں نے بتایا کہ پولیس افسران آفتاب احمد رند ، منظور سولنگی اور انسپکٹر علی عباس مقتول کے اہلِ خانہ سے فون اورایس ایم ایس کے ذریعے رشوت کی رقم طلب کرتے رہے جس کے ثبوت پیش کئے جاسکتے ہیں، حد یہ ہے کہ ملزم کی پیشی پرڈیزل کے لئے بھی پیسے مانگے گئے۔

حیدر عباس رضوی نے آئی جی سندہ اور پولیس چیف کراچی کو متنبہ کیا کہ عوامی ردعمل آنے پہلے اس قسم کے واقعات کا سدِباب یقینی بنایاجائے، اگراسی طرح پولیس کی حراست میں کارکنان کی ہلاکت کا سلسلہ جاری رہا توعوام کے صبرکا لبریز ہوجائے گا۔

مقتول فرازعالم کی عمر 23 سال تھی اورگزشتہ سال اس کی شادی ہوئی تھی۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں