The news is by your side.

Advertisement

سانحہ ماڈل ٹاؤن میں انصاف نہ ملنے پر پی اے ٹی کا مظاہروں کا اعلان

لاہور: پاکستان عوامی تحریک نے سانحہ ماڈل ٹاؤن پر انصاف نہ ملنے کیخلاف مظاہروں کا اعلان کر دیا ہے۔

پاکستان عوامی تحریک کے مرکزی صدر ڈاکٹر رحیق عباسی نے لاہور سے جاری ایک بیان میں کہا ہے کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن کو 6 ماہ سے زائد عرصہ گزر گیا ہے لیکن حکومت انصاف فراہم نہیں کر رہی، اب ان کے صبر کا پیمانہ لبریز ہو گیا ہے۔

انہوں نے حکومت کیخلاف احتجاجی مظاہروں کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ اس سلسلے کا پہلا مظاہرہ 17 جنوری کو لاہور میں کیا جائے گا, ان کا کہنا تھا کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن کے کردار توقیر شاہ کی ڈبلیو ٹی او میں بطور سفیر تقرری کیخلاف بھی دستخطی مہم شروع کی جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ بہت صبر کر لیا، شہداء کے خون کا حساب اور انصاف کیلئے ہر حد تک جائیں گے۔

واضح رہے کہ لاہور ماڈل ٹاؤن میں 17 جون 2014ء کو پنجاب پولیس اور پاکستان عوامی تحریک کے کارکنان کے تصادم ہوا، جسکے نتیجے میں پاکستان عوامی تحریک کے دو عورتوں سمیت 14 افراد ہلاک اور 90 سے افراد زائد شدید زخمی ہوئے۔

یہ کشیدگی اس وقت شروع ہوئی جب پولیس کی تجاوزات ہٹانے والی نفری نے ماڈل ٹاؤن لاہور میں جامعہ منہاج القران کے دفاتر اور پاکستان عوامی تحریک کے بانی و سربراہ ڈاکٹر محمد طاہرالقادری کی رہائش گاہ کے باہر موجود رکاوٹیں ہٹانے کیلیے آپریشن کا آغاز کیا۔

دوسری جانب تحریکِ انصاف نے اٹھارہ جنوری سے دھرنا کنویشن منعقد کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے، ترجمان کا کہنا ہے کہ پہلے اسلام آباد پھر کراچی،لاہور اور پشاور میں کنونشن ہوں گے۔

ترجمان عمران خان نعیم الحق کے مطابق دھرنا ڈی چوک پر نہیں کیا جائے گا، اٹھارہ جنوری کو اسلام آباد کے نجی ہوٹل میں منعقد کنونشن سے پارٹی چیئرمین عمران کان خطاب کریں گے۔

جس کے بعد ورکرز کنویشن مختلف شہروں میں منعقد کیا جائیگا، یکم فروری کو کراچی، آٹھ فروری لاہور اور پندرہ کو پشاور میں کنونشن منعقد کیا جائیگا۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں