site
stats
عالمی خبریں

سرحدی تنازعہ پرعالمی عدالت کے فیصلے کو تسلیم کرینگے،چلی صدر

چلی کے صدر سبسٹین پینرا نے کہا ہے کہ چلی اور پیرو سرحدی تنازعہ پر عالمی عدالت انصاف کے حتمی فیصلے کو من و عن تسلیم کرکے دنیا میں امن کی اعلٰی مثال قائم کرسکتے ہیں۔

دارلحکومت سان تیاگو میں چلی کی نو منتخب صدر مشیل بچلیٹ سے ملاقات میں دونوں رہنماؤں نے اس بات پر اتفاق کیا کہ سرحدی تنازعے پر عالمی عدالت انصاف کے فیصلے کو تسلیم کیا جائے گا، تین گھنٹے تک جاری رہنے والی ملاقات میں دونوں رہنماؤں نے مختلف امور پر بھی تبادلہ خیال کیا۔

چلی کے سبکدوش ہونے والے صدر پینرا نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ بین الاقوامی قوانین کے تحت ہر ریاست دوسری ریاست کے ساتھ کیے جانے والے معاہدوں کی پاسداری کرنے سمیت عالمی عدالت انصاف کے فیصلے کو بھی من و عن تسلیم کرنے کی بھی پابند ہے۔

دوسری جانب پیرو کے صدر اولانٹا ہومالا بھی متعدد بار کہہ چکے ہیں کہ دونوں ملکوں درمیان سرحدی تنازعہ پر عالمی عدالت انصاف کے فیصلے کو تسلیم کرینگے۔

واضح رہے کہ پیرو نے دوہزار آٹھ میں عالمی عدالت سے رجوع کیا تھا کہ چلی اس کی اڑتیس ہزار کلومیٹر سرحدی علاقے پر قابض ہے، عالمی عدالت انصاف ستائیس جنوری چلی اور پیرو کے درمیان سرحدی تنازعہ کا فیصلہ سنائے گی۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top