The news is by your side.

Advertisement

سرکاری ملازم کو’میت کے بہانے‘ چھٹی کی قیمت نوکری سے چکانا پڑی

ٹوکیو: جاپان میں ایک سول سرونٹ جو کہ چھٹیوں کے لئے عزیزو اقارب کی جھوٹی موت کا سہارا لیتا تھا ایک ہی رشتے دار کی دوبار آخری رسومات میں شرکت کا بہانہ بناتے ہوئے پکڑا گیا۔

شگنوری ناٹوری شمال مشرقی جاپان میں عوامی پارکوں کا نگران تھا اور اسے پانچ سال میں 16 جھوٹی اموات کی خبر سنا کر چھٹی لینے کے جرم میں نوکری سے برخواست کردیا گیا۔

ساٹھ سالہ ناٹوری اس مقصد کے لئے جعلی دستاویزات تیار کیا کرتا تھا اور ان دستاویزات کے مطابق اس نے ایسے افراد کی میت میں شرکت کی ہے جو یا تو زندہ ہیں یا ان کا کوئی وجود نہیں ہے۔

اس کی شامت اس وقت آئی جب جنوری میں اس نے اپنے ایک قریبی انکل کی آخری رسومات میں شرکت کے لئے چھٹی مانگی اور اس کے باس کو شک ہوا کہ وہ مذکورہ شخص کی میت کے لئے پہلے ہی چھٹی عنایت کرچکا ہے۔

شہر کے ترجمان سےبات کرتے ہوئے ناٹوری کا کہنا تھا کہ وہ اپنی تمام تر چھٹیاں کرچکا تھا لہذا اس نے جھوٹے دستاویزات کا سہارا لیا اور اس کے لئے وہ شرمندہ ہے۔

ناٹوری کو اسکی ریٹائرمنٹ سے صرف ایک ہفتہ قبل اسکی خدمات سے برطرف کردیا گیا اور سزا کے طور پر ریٹائرمنٹ پر ملنے والی رقم کا نصف جرمانہ بھی کیا گیا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں