The news is by your side.

Advertisement

سری لنکا کے صدارتی انتخابات: سابق صدر کی شکست میں ’را‘ ملوث

کولمبو: سری لنکا نے بھارتی خفیہ ایجنسی کے کولمبو میں تعینات اسٹیشن چیف کو ملک بدرکردیا، بھارتی خفیہ ایجنسی کے عہدیدارپرالزام ہے کہ انہوں نے سابق صدرمہیندا راجہ پکسا کے مخالف صدارتی امیدوار کی الیکشن میں معاونت کی۔

بھارتی وزارتِ خارجہ کے ترجمان نے ان اطلاعات کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ تبادلے معمول کی بات ہے۔ راجہ پکسا نے غیر ملکی خبررساں ادارے کو بتایا کہ انہیں اس معاملے سے جڑے حقائق کاعلم نہیں جبکہ کولمبو کی نو منتخب حکومت کا جہنا ہے کہ انہیں اس معاملے کا علم ہے لیکن فی الحال وہ اس کی تصدیق نہیں کرسکتے۔

بھارت اورسری لنکا سے موصول ہونے والی متعدد اطلاعات کے مطابق بھارتی ایجنٹ نے متحدہ حزبِ اختلاف کے مشترکہ امیدوارمیتھرا سری سینا کی مدد کی تھی۔

سری لنکا کے مقامی اخبار میں شائع ہونے والی رپورٹ کے مطابق متحدہ حزبِ اختلاف سے تعلقات کے عوض بھارتی ایجنسی ’را‘ کے افسر کو اپنی نوکری سے ہاتھ دھونا پڑے۔

بھارت اس سے قبل بھی کئی بار سری لنکا کے داخلی معاملات میں مداخلت کرچکا ہے۔ 1987 میں بھارت نے تامل ٹائیگرز اور سری لنکن حکومت کے مابین امن قائم کرانے کے لئے اپنی فوجیں اتاریں تھیں۔

راجہ پکسا کی حکومت کے بھارت کے دیرنہ حریف چین سے بڑھتے ہوئے تعلقات ہندوستان کے لئے خطرے کا سبب بن رہے تھے۔

سری لنکہ کے نو منتخب صدر سری سینا کا کہنا ہے کہ وہ بحیثیت صدر اپنا پہلا سرکاری دورہ بھارت کا کریں گے ، انہوں نے مزید کہا کہ ان کی خارجہ پالیسی میں’بھارت‘ پہلی ترجیح ہے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں