The news is by your side.

Advertisement

سعودیہ میں منشیات کی اسمگلنگ کے جرم میں دو افراد کے سرقلم

ریاض: منشیات کی اسمگلنگ کے جرم میں سعودی حکومت نے دو افراد کے سر قلم کردیے، سعودی عرب میں یہ سال 2015 کی پہلی سزائیں ہیں گزشتہ سال 87 مجرموں کے سر قلم کئے گئے تھے۔

وزارتِ داخلہ کے مطابق ملک بن سید السیاری کو جمعرات کے روز مشرقی صوبے کے ضلع الحصاء میں سزائے موت دی گئی۔

ریاض میں حسین الدوساری کا سعودی پولیس افسر کو قتل کرنے اور منشیات کی اسمگلنگ کے جرم سرقلم کیا گیا۔ الدوساری نے انسدادِمنشیات کی روک تھام کے لئے پیٹرول پر تعینات افسر کو اس وقت قتل کیا کہ جب افسر نے الدساری کو گرفتار کرنے کی کوشش کی۔

سعودی عرب میں سزائے موت کی سزا پرعملدرآمد کی شرح میں اضافہ ہوا ہےحالانکہ اقوام متحدہ اقوام متحدہ اور انسانی حقوق کے نگراں ادارے بارہا سزائے موت کی سزا ملتوی کرنے کی اپیلیں کرچکے ہیں۔

گزشتہ سال سعودی عرب میں 87 افراد کو مختلف جرائم میں سزائے موت کی سزا دی گئی۔

سعودی عرب ریپ، قتل، ڈکیتی ، مرتد ہونے اور منشات کی اسمگلنگ پراسلامی قوانین کے مطابق سزائے موت دی جاتی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں