The news is by your side.

Advertisement

سلمان تاثیر قتل کیس: ممتاز قادری کی سزائے موت برقرار

اسلام آباد: گورنر سلمان تاثیر قتل کیس میں اسلام آباد ہائیکورٹ نے ملزم ممتاز قادری کی سزائے موت برقرار رکھنے کا حکم دیا ہے۔

سابق گورنر پنجاب شہباز تاثیر کے قاتل ممتاز قادری کی سزائے موت کیخلاف اپیل کی سماعت اسلام آباد ہائیکورٹ میں ہوئی، عدالت نے مجرم ممتاز قادری کی اپیل خارج کرتے ہوئے سزائے موت کا حکم برقرار رکھنے کا حکم دیا۔

عدالت نے سزائے موت کے مجرم کیخلاف انسداد دہشتگردی قانون کے تحت لگائی گئی دفعات کو ختم کردیا۔

گزشتہ روز اسلام آباد ہائیکورٹ کے دو رکنی بنچ جسٹس نورالحق این قریشی اور جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے دونوں فریقین کے دلائل سننے کے بعد سابق گورنر پنجاب سلمان تاثیر قتل کیس میں گرفتار ملک ممتاز قادری کی انسداد دہشت گردی کی عدالت سے ہونے والے سزائے موت کیخلاف اپیل پر فیصلہ محفوظ کیا تھا۔

ممتاز قادری کو انسدادِ دہشت گردی کی عدالت نے سلمان تاثیر قتل کیس میں موت کی سزا سنائی تھی، جسے درخواست گزار نے عدالت میں چیلنج کیا تھا۔

کیس کے فیصلہ کے موقع پر سکیورٹی پلان ترتیب دے دیا گیا ہے جسکے تحت ضلعی انتظامیہ اور پولیس کی جانب سے سکیورٹی خدشات کے باعث اضافی نفری تعینات کی جائے گی۔

ہائیکورٹ کی طرف سے آنے والے تمام داخلی و خارجی راستوں کو بلاک کردیا جائے گا اور عدالت کے اردگرد قائم عمارتوں پر کمانڈوز تعینات کئے جائیں گے۔

واضح رہے کہ ممتاز قادری نے چار جنوری دوہزار گیارہ کو اسوقت کے گورنر پنجاب سلمان تاثیر کو قتل کردیا تھا، عدالت نے یکم اکتوبر دوہزار گیارہ کو ممتاز قادری کو موت کی سزا سنائی تھی ۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں