سندھ میں سیلاب کاخطرہ، لوگوں کی نقل مکانی جاری -
The news is by your side.

Advertisement

سندھ میں سیلاب کاخطرہ، لوگوں کی نقل مکانی جاری

سندھ: سیلاب کے خطرے کے پیشِ نظر سندھ کے مختلف علاقوں سے لوگوں کی نقل مکانی جاری ہے، وزیراعلیٰ سندھ کے احکامات کے باوجود خیرپورمیں ایک بھی ریلیف کیمپ نہیں لگایا گیا ہے۔

سیلابی ریلہ بالائی پنجاب میں سینکڑوں بستیاں صفحہ ہستی سے مٹاتا ہواجنوبی پنجاب میں تباہی مچارہا ہے، پنجاب میں موسلادھار بارش اور بھارت کی جانب سے چھوڑے جانے والے پانی نے تباہی مچا رکھی ہے، ملتان میں سیلاب کے خطرے کے پیشِ نظرسوکے قریب دیہات خالی کرالئے گئے ہیں، جن میں بندبوسن، نواب پور، ہیڈ محمد والا، بستی گرے والا، بستی لنگڑیال اور شیر شاہ کے چندعلاقےشامل ہیں۔

سیلابی ریلہ اب تیزی سے سندھ کی جانب رواں دواں ہے، سندھ حکومت نے کچھ روز قبل دریائے سندھ کے نشیبی علاقوں سےآٹھ لاکھ افراد کے انخلاء کا اعلان کیا تھا، جس کے بعد مختلف علاقوں سے لوگوں کی نقل مکانی جاری ہے۔

وزیرِاعلی سندھ قائم علی شاہ کے آبائی ضلع خیرپور کے کچےکے مکین بے یارو مددگار رہنے پر مجبور ہیں، وزیرِاعلی سندھ کےاحکامات کے باوجود ایک بھی ریلیف کیمپ قائم نہیں کیا گیا ہے۔

کچے کے علاقے میں سینکڑوں مویشی مختلف بیماریوں میں مبتلا ہیں لیکن کوئی پرسان حال نہیں، ضلعی انتظامیہ کی جانب سےسیلاب کے خطرے کے باعث کچے میں ریڈ الرٹ جاری کردیا گیا ہے جبکہ حکومت سندھ کی جانب سے دریا کے کنارے پشتوں کو مضبوط کرنے اور اس کی نگرانی کا عمل جاری ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں