The news is by your side.

Advertisement

سول نافرمانی کی تحریک کا اعلان قوم کے ساتھ بڑامذاق ہے، الطاف حسین

لندن :  ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین نے کہا ہے کہ عمران خان کی جانب سے سول نافرمانی کی تحریک کا اعلان قوم کے ساتھ بڑا مذاق ہے، انہیں یہی کچھ کرنا تھا تو وہ کئی روز تک قوم کا وقت ، توانائی اورپیسہ خرچ کرنے کے بجائے پہلے ہی اس کا اعلان کردیتے ۔

ایم کیوایم کے مرکز نائن زیرو پر رابطہ کمیٹی، تنظیمی شعبہ جات کے عہدیداروں اور کارکنوں سے گفتگو میں الطاف حسین کا کہنا تھا کہ سول نافرمانی گڈے گڑیا کا کھیل نہیں بلکہ ملک کے نظام کے مستقبل کا معاملہ ہے، ملک کی معیشت کا بھٹہ بیٹھ چکا ہے ، اتنا کچھ ہونے کے بعدعمران خان کو یہی کرنا تھا تو وہ پہلے ہی کردیتے ۔

الطاف حسین کا کہنا تھا کہ عمران خان نے عوام کو پانی بجلی گیس کا بل اور ٹیکس نہ دینے کا اعلان کیا ہے جبکہ لوگ بجلی کا بل ویسے ہی نہیں دیتے اورکنڈا لگا کر بجلی حاصل کرلیتے ہیں،اسی طرح ٹیکس کی چوری بھی ہوتی ہے۔

الطاف حسین نے وزیراعظم نوازشریف اورعمران خان سے اپیل کی کہ وہ مسائل کے حل کے لئے سول نافرمانی کے بجائے بات چیت کا آغاز کریں اور اپنے مطالبات دلائل کے ساتھ منوائیں۔

انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف حکومت کی غلط پالیسیوں کے خلاف گزشتہ کئی دنوں سے آزادی مارچ کے نام پر جلسے جلوس کررہی ہے ، پنجاب کے مختلف شہروں سے عوام کوطفل تسلیاں دی گئیں اوربڑے بڑے خوش کن نعرے دے کر اسلام آباد لایا گیا اور یہ کہا گیا کہ جب تک مقاصد حاصل نہیں ہوجاتے اس وقت تک ہم دھرنے سے نہیں اٹھیں گے ، اس دوران کاروبار زندگی متاثر ہوا، اسٹاک مارکیٹ گر گئی اور سیکورٹی کے انتظامات پر بھی بڑا خرچہ آرہا ہے، یہ پیسہ وزیراعظم نوازشریف کی ذاتی جیب سے نہیں جائیگا بلکہ ملک کے خزانے سے ہی جائے گا۔ اگر اتنا کچھ ہونے کے بعدعمران خان کو یہی کرنا تھا تو وہ پہلے ہی کردیتے ۔

 الطاف حسین نے کہاکہ میں میاں نوازشریف کی حکومت کاحمایتی نہیں، نوازشریف حکومت نے ماضی میں بھی ایم کیوایم کے ساتھ برا کیا تھا لیکن میں بدلہ لینے کاقائل نہیں، مجھے پاکستان کے عوام کا بھلاچاہیے، عوام پہلے ہی بہت پریشان ہیں، میں سمجھتا ہوں کہ عمران خان نے عوام کے ساتھ مذاق کیا ہے۔

الطاف حسین نے کہا کہ اگر کوئی خوش خیالی میں یہ سوچے کہ میں ٹارزن ہوں، ٹائی سن یامحمدعلی کلے ہوں تو سوچنے سے کوئی ٹارزن یاٹائی سن نہیں بن جاتا، انہوں نے کہا کہ میں نے ملک کی بہتری، سلامتی وبقاء اورملک کے عوام کی ترجمانی کرتے ہوئے سول نافرمانی کے حوالے سے اپنے خیالات کا اظہار کیا ہے کیونکہ میں سمجھتا ہوں کہ بعض جگہوں پر مصلحت سے کام لینا گناہ کبیرہ ہوجاتا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں