سپریم کورٹ میں وزیرِاعظم کی نااہلی پر درخواستوں کی سماعت -
The news is by your side.

Advertisement

سپریم کورٹ میں وزیرِاعظم کی نااہلی پر درخواستوں کی سماعت

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے وزیرِاعظم نااہلی کیس میں پی ٹی آئی کے وکلاء سے سوال کرلیا کہ کیا کوئی ایسا طریقہ ہے کہ آپ آرمی چیف کا بیان حلفی لے آئیں؟

وزیرِاعظم کی نااہلی سے متعلق درخواستوں کی سماعت جسٹس جواد ایس خواجہ کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نےکی، پی ٹی آئی کے وکیل گوہر نواز سندھو نے دلائل میں کہا کہ وزیرِاعظم نے بیان دیا کہ انھوں نے آرمی کو کردار ادا کرنے کا نہیں کہا تھا لیکن آئی ایس پی آر نے بیان جاری کیا کہ وزیرِاعظم کے کہنے پر کردار ادا کیا۔

جسٹس دوست محمد نےاستفسار کیا کہ کوئی ایسا طریقہ ہے کہ آپ آرمی چیف کا بیان حلفی لے آئیں؟ جسٹس جواد نے مؤقف کی سماعت کے بعد وکلاء کو کہا کہ ہم مشکور ہیں کہ یہ کیس لائے، آپ درخواست میں ترمیم کرنا چاہیں تو کرلیں، درخواست واپس نہیں ہوگی۔

جسٹس جواد کا کہنا تھا کہ کوئی مائی کا لعل ایسا نہیں جس کے ہاتھ میں جان ہو، اگرکوئی طالع آزما یہ سمجھتا ہے تو وہ یہاں بیٹھے ہیں آجائے۔

عدالت نے درخواست میں ترمیم سے متعلق وقت دیتے ہوئے سماعت پندرہ اکتوبر تک ملتوی کردی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں