The news is by your side.

Advertisement

سپریم کورٹ کا چیئرمین پیمرا پرویز راٹھورکی معطلی کا حکم کالعدم قرار

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے اسلام آباد ہائی کورٹ کا چیئرمین پیمرا پرویز راٹھورکی معطلی کا حکم کالعدم قرار دے دیا ہے۔

سپریم کورٹ نے ہائی کورٹ کو ہدایت کی ہے کہ وہ مقدمے کی تفصیلی سماعت کرنے کے بعد ہی کوئی حکم جاری کرے، سپریم کورٹ کے حکم کے نتیجے میں اپنے عہدے پر بحال ہوگئے ہیں، اپیل کی سماعت چیف جسٹس ناصر الملک اور جسٹس مشیر عالم پر مشتمل دو رکنی بنچ نے کی۔

  وفاق کی جانب سے محمود شیخ ایڈوکیٹ نے موقف اختیار کیا کہ اسلام آباد ہائی کورٹ نے ابتدائی مرحلے میں ہی حتمی فیصلہ دے دیا، جس کی استدعا بھی نہیں کی گئی تھی ، ہائی کورٹ نے نہ صرف پرویز راٹھور کو معطل کیا بلکہ خالی نشت پر کرنے پر بھی پابندی عائد کر دی، ہائی کورٹ کے حکم کے باعث پیمرا کے روز مرہ امور کی انجام دہی بھی معطل ہو کر رہ گئی ہے۔

فریق مخالف شمس الدین کے وکیل حشمت حبیب نے موقف اختیار کیا کہ ہائی کورٹ کا حکم قانون کے مطابق ہے کیونکہ وزیر اعظم کو چیئرمین پیمرا کے تقرر کا اختیار حاصل نہیں بلکہ آئین کے تحت صدر کو یہ اختیار حاصل ہے جبکہ یہ نوٹفیکشن وزیراعظم نے جاری کیا تھا۔

چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ صدر نے دوبارہ نوٹیفیکشن جاری کرکے غلطی کی تصیح کر دی تھی اور ہائی کورٹ کو ضابطہ کی کارروائی مکمل کیئے بغیر عبوری حکم جاری کرنے کا اختیار حاصل نہیں ہے، سپریم کورٹ اپنے مختصر حکم کی تفصیل بعد میں جاری کرے گی۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں