The news is by your side.

Advertisement

سپریم کورٹ: کنٹونمنٹ میں بلدیاتی الیکشن کا شیڈول منظور، صوبوں کا نیا شیڈول مسترد

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے کنٹونمنٹ میں بلدیاتی انتخابات کےشیڈول کوقبول کرلیا ہے، بلدیاتی انتخابات پچیس اپریل کو ہونگے۔

اٹارنی جنرل نے بلدیاتی انتخابات کا ترمیم شدہ شیڈول سپریم کورٹ میں جمع کرایا، جس کے بعد سپریم کورٹ نے کنٹونمنٹ میں بلدیاتی انتخابات کا شیڈول کو قبول کرلیا جبکہ صوبوں کےلیے دیا گیا انتخابی شیڈول مسترد کردیا اور ترمیم شدہ شیڈول ایک گھنٹے میں سپریم کورٹ میں جمع کرانے کی ہدایت کر دی، کنٹونمنٹ ایریاز میں انتخابات پچیس اپریل کو ہونگے۔

گزشتہ روز سپریم کورٹ نے سندھ اور پنجاب میں ستمبر تک بلدیاتی انتخابات کرانے کا حکم دیا تھا، اٹارنی جنرل نے کینٹونمنٹس میں بلدیاتی انتخابات کیلئے سولہ مئی کی تاریخ دے دی، صوبوں میں انتخابی شیڈول پر عدم اطمینان ظاہر کرتے ہوئے جسٹس جواد ایس خواجہ کا کہنا تھا کہ شیڈول کی مدت میں کمی کی جائے، بلدیاتی انتخابات کا شیڈول دس مارچ تک جمع کرایا جائے، آر اوز دو دن میں تعینات ہوسکتے ہیں۔

جسٹس جواد ایس خواجہ نے کہا کہ الیکشن کمیشن نے اپنی ذمہ داری نہیں نبھائی۔

اٹارنی جنرل نے دلائل میں کہا کہ انتخابات کی تاریخ میں تبدیلی ممکن ہے مگرحلقہ بندیوں میں چار ماہ لگیں گے،عدالت کا کہنا تھا کہ آج سے ساڑھے چار ماہ گن لیں، جسٹس جواد ایس خواجہ نے پوچھا کہ یہ کام اب تک کیوں نہیں کیا گیا ۔الیکشن کمیشن اپنی ذمہ داری پوری کرنےمیں ناکام رہا۔

سیکریٹری الیکشن کمیشن کا کہنا تھاکہ بلدیاتی انتخابات پارلیمنٹ لیکشن کی طرح نہیں، بلدیات میں ترپن ہزار حلقے ہیں، سیکریٹری الیکشن کمیشن کے دلائل پر عدالت نے نومبر دو ہزار چودہ سے اب تک کے اقدامات کی رپورٹ بھی دس مارچ تک جمع کرانے کی ہدایت کی۔ جسٹس جواد ایس خواجہ نے کہ کہ پہلے ایک ایک دن کا حساب دیں پھر چاہے بلدیاتی انتخابات سنہ دو ہزار بیس میں کروالیں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں