The news is by your side.

Advertisement

سندھ :کشمور اور اوباڑو کے مقام پر کچے کے کئی دیہات زیرِآب

سندھ: سیلابی ریلے نے پنجاب میں تباہی مچانے کے بعد سندھ میں بھی تباہی پھیلانا شروع کردی ہے، کشمور اور اوباڑہ کے مقام پر کچے کے کئی دیہات زیرِ آب آگئے۔

دریائے چناب کا سیلابی ریلہ ہیڈ پنجند سے ہوتا ہوا سرکی کے مقام پر دریائے سندھ میں داخل ہورہا ہے، جس سے دریائے سندھ میں طغیانی کے باعث علی پور رجھان پور اور رحیم یار خان ڈویژن کی متعدد آبادیاں زیرِآب آگئی، ہزاروں ایکٹر زرعی زمین آنے سے فصلیں تباہ ہوگئی ہیں۔

ہیڈ پنجند سے ایک سو پینتالیس کلومیٹر دو جنوب مغرب میں واقع رحیم یارخان کےمنجلن بند کے قریب آنے والے سیلابی ریلے سے ڈیرہ لاکھ کی آبادی متاثر ہوئی جبکہ پندرہ ہزار ایکٹر پر پھیلی فصلیں دریا بُرد ہوگئی ہے۔

اُوچ شریف میں بیٹ بختاری زمیندارہ بند کے قریب سیلابی پانی گھر وں میں داخل ہوگیا ہے، درجنوں مویشی بھی ڈوب گئے، پنجاب میں سیلاب کی سطح مسلسل گررہی ہیں ، تاہم سندھ میں سیلاب کی سطح میں اضافہ دیکھنےمیں آرہا ہے۔

اِس وقت گڈو کے مقام سے تین لاکھ نوے ہزار کیوسک کا سیلابی ریلہ گزر رہا ہے جبکہ آج رات پنجاب سے آنے والا ساڑھے چار لاکھ کاسیلابی ریلہ گڈو کے مقام سے گزرے گا۔

سیلاب سے کشمور اور اوباڑہ کے کچے کے علاقوں میں سیلابی ریلوں سے تباہی مچائی اور کئی دیہات زیر آب آگئے، محکمۂ آب پاشی کے مطابق سیلابی ریلہ کندھ کوٹ سکھر اور حیدرآباد کے کچے کے علاقوں کو متاثرہ کرتا ہوا سمندر میں گرے گا۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں