سیلابی صورتحال،12ستمبر سے پانی کے بہاؤ میں مزید اضافے کا اندیشہ -
The news is by your side.

Advertisement

سیلابی صورتحال،12ستمبر سے پانی کے بہاؤ میں مزید اضافے کا اندیشہ

لاہور/پنجاب: ملک بھر میں سیلاب کی تشویشناک صورتحال کے باعث بارہ ستمبر سے پانی کے بہاؤ میں مزید اضافے کا اندیشہ ہے۔

دریائے چناب میں ہیڈ مرالہ کےمقام پر پانی کی آمد پچاسی ہزارچار سو، اخراج بیاسی ہزارچارسو کیوسک ہے، ہیڈخانکی پر پانی کی آمد اور اخراج اٹھاسی ہزارسات سوچھیتر،  ہیڈ قادر آباد میں تیرانوے ہزار آٹھ سو تیرانوے، ہیڈ پنجند پر پانی کی آمد1لاکھ اکیاسی ہزار سات سو تئیس اور  اخراج ایک لاکھ پانچ ہزار آٹھ سو تئیس کیوسک ریکارڈ کیا گیا ہے۔

منگلا کے مقام پر پانی کی آمد اناسی ہزاراوراخراج چوون ہزارنوسوچوالیس کیوسک ریکارڈ کیا گیا ہے، ہیڈ رسول کے مقام پر پانی کی آمد تریسٹھ ہزار تین سو اکیانوے اوراخراج ساٹھ ہزارایک سواکیانوے ہے، ہیڈ بلوکی پرآمد چوہترہزارپانچ سو پندرہ اوراخراج ساٹھ ہزارایک سو اکیانوے، ہیڈ سدھنائی میں آمد اکتالیس ہزار ایک سو تیرہ اوراخراج اٹھائیس ہزاردو سو تریسٹھ کیوسک ریکارڈ کیا گیا ہے۔

ہیڈ سلیمانکی میں پانی کی آمد اٹھارہ ہزارایک سو چودہ اوراخراج بارہ ہزار نو سو چونتیس، ہیڈاسلام میں پانی کی آمد انیس ہزار آٹھ سو تیس اخراج ستراہ ہزار آٹھ ہزار ساٹھ ،میلسی پرپانی کی آمد اوراخراج 15ہزار531کیوسک ریکارڈ کیا گیا ہے۔

چھ لاکھ چھبیس ہزار چھ کیوسک کا بڑا سیلابی ریلہ ہیڈ تریموں کے مقام سے گزرے گا، بارہ ستمبر تک پانی کا بہاؤ آٹھ لاکھ کیوسک تک پہنچنے کا امکان ہے۔

محکمہ موسمیات کے مطابق سیلابی پانی ملتان، خانیوال ، مظفرگڑھ ، جھنگ اورٹوبہ ٹیک سنگھ میں بھی داخل ہو سکتا ہے، کالا باغ ڈیم کے مقام پر پانی کی آمد ایک لاکھ ایک ہزاردو سو بائیس اور اخراج تیرانوے ہزار ایک سو بائیس جبکہ تونسہ کے مقام پر آمد اناسی ہزار تین سو چھپن اور اخراج تیرسٹھ ہزار پانچ سو چھپن کیوسک ریکارڈ کیا گیا۔

دریائے سندھ میں پانی کی سطح تیزی سے بلند ہونے لگی ہے، گڈو کے مقام پر 13ستمبر جبکہ سکھر میں ،14ستمبر کو اونچے درجے کا سیلاب متوقع ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں