site
stats
اہم ترین

سیلاب کی تباہ کاریاں: کئی دیہات صفحہ ہستی سے مٹ گئے

گجرانوالہ :بھارت سےآنےوالےسیلابی ریلوں نےپنجاب کےبالائی علاقوں میں تباہی مچا دی۔جہلم، چناب اور راوی میں آنے والی طغیانی نےسیکڑوں دیہات ڈبو دیئے،چنیوٹ میں تئیس دیہات صفحہ ہستی سے مٹ گئے گجرانوالہ میں خانکی کے مقام پر دریائے چناب میں انتہائی اونچے درجےکا سیلاب ریکارڈ کیا جارہا ہے۔سیلابی پانی آبادی کی جانب بڑھنا شروع ہوگیا ہے۔

چناب کی بپھرتی موجوں نے کئی دیہات غرق آب کردیئے،دریائے چناب اور دریائے جہلم کا سیلابی ریلا جھنگ میں داخل ہوا تو درجنوں دیہات ڈبو گیا اور کسانوں کی محنت کو پانی میں ملا دیا۔آٹھ ہزار کیوسک کی گنجائش رکھنے والے نالہ ڈیک سے اس وقت چوالیس ہزار کیوسک پانی گزر رہاہے۔

دریائے راوی میں ہیڈ بلوکےمقام پر اونچے درجے کا سیلاب ہے جبکہ شاہدرہ کے مقام پریہ سیلاب درمیانے درجے کاہے۔طغیانی کے باعث پانی آبادیوں میں داخل ہوگیاہے۔ پنجاب میں گرجتےبادلوں کےبرسنےسے منہ زور برساتی پانی نےسیلابی صورت اختیارکی توبھارت نےبھی دریائے چناب پرقائم بگلیہار ڈیم کےاسپل ویز کھول کرپاکستان میں بدترین سیلاب کاسامان کیا۔

جہلم چناب راوی اور ستلج میں طغیانی نے سیکڑوں دیہات پانی میں ڈبو دئیے اور کھڑی فصلیں تباہ کردیں۔۔سیلاب کےباعث متعدددیہات میں مکیں اپنے آشیانوں سےمحروم ہوگئےاورنقل مکانی پر مجبورہوئے۔بھارت کی جانب سے گنجائش سےزائد چھوڑے گئے سیلابی ریلوں کےباعث سیالکوٹ شہر کا بیشترعلاقہ زیرآب ہے اور سیالکوٹ کاپسرور سے زمینی رابطہ بھی منقطع ہوگیا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top