سینیٹ کا اجلاس، اپوزیشن کا احتجاج اور واک آوٹ -
The news is by your side.

Advertisement

سینیٹ کا اجلاس، اپوزیشن کا احتجاج اور واک آوٹ

اسلام آباد: سینیٹ کا اجلاس آج ڈپٹی چیئرمین صابر بلوچ کی زیر صدارت شروع ہوا جس میں بچوں کیساتھ زیادتی کے واقعات پرقانون سازی نہ ہونے پرمتحدہ اپوزیشن نے علامتی واک آؤٹ کیا۔ سینیٹ میں میڈیا پر پابندی سے متعلق ایک بل بھی پیش کیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق آج اسلام آباد میں سینیٹ کا اجلاس ڈپٹی چیئرمین صابر بلوچ کی زیر صدارت شروع ہوا  اور اجلاس میں میڈیا پر پابندی سے متعلق ایک بل پیش کیا گیا جس کا مسودہ قانون پیپلز پارٹی کے فرحت اللہ بابر نے پیش کیا۔ مذکورہ بل متعلقہ کمیٹی کے سپرد کیا گیا جبکہ بل کے خلاف صحا فیوں نے کا سینیٹ کے اجلاس سے واک آوٹ کیا۔

صحافیوں کے خدشات پر زاہد خان نے ان سے اظہار یکجہتی کر تے ہو ےت کہا کہ بل سینیٹ سے منظور نہیں ہو نے دے گے۔ اجلاس میں ایم کیو ایم کے سینیٹر کرنل ریٹائرڈ طاہر مشہدی نے ملک میں بچوں کیساتھ زیادتی کےواقعات سے متعلق معاملے کو اٹھایا۔ جس پر اراکین نےاظہارخیال کرتے ہوئے مجرموں کو سزائیں نہ دینے پر احتجاج کیا۔ پیپلز پارٹی کی سینیٹرصغریٰ امام نےزیر بحث معاملے سے متعلق سوال کے جواب نہ آنے پر اجلاس سے واک آؤٹ کیا۔ بچوں سے زیادتی سے متعلق قانون سازی نہ ہو نے پر متحدہ اپوزیشن کی جانب سے سینیٹ سے واک آؤٹ  بھی کیا گیا۔ اس سےقبل سینیٹ میں وزرا کی عدم موجودگی پر بھی اپوزیشن نے احتجاج کیا۔

پیپلز پارٹی کے سینیٹر اعتزاز احسن کاکہنا تھا کہ وزرا سینیٹ کی کارروائی میں دلچسپی نہیں لیتے۔ اعتزاز احسن نے کہا کہ آئین کے تحت کابینہ سینیٹ کو بھی جوابدہ ہے۔ اس موقع پر اپوزیشن اراکین نے مطا لبہ کیاکہ سینیٹ میں وزرا کی موجودگی یقینی بنا ئی جا ئے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں