site
stats
پاکستان

شاہراہ دستور پر واقع حساس عمارتوں کی سیکیورٹی انتہائی سخت

اسلام آباد: ڈاکٹر طاہر القادری اور عمران خان کے ریڈ زون میں دھرنا دینے کا اعلان کرنے کے بعد شاہراہ دستور پر واقع حساس عمارتوں کی سیکیورٹی انتہائی سخت کردی گئی ہے۔

تفصلات کے مطابق پارلیمنٹ ہاؤس کے مرکزی دروازے کو خاردار تاریں اور ریت کی بوریاں لگا کرسیل کردیا گیا ہےاور فوج نے حساس عمارتوں کا نظم و نسق اپنے اختیار میں لے لیا ہے ۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ پاک فوج کے جوان ڈپلومیٹک انکلیو اور دیگر حساس عمارتوں کے اندر تعینات رہیں گے جب کہ رینجرز اور پولیس باہر کی صورتحال سنبھالنے کے لئے موجود رہے گی۔ پاک فوج کے جوان براہ راست عوام کے سامنے نہیں آٗئیں گے۔

آئی ایس پی آر کے اعلامیے کے مطابق حکومتی درخواست پر پاک فوج کےپہلے سے ریڈ زون موجود دستوں کو شاہراہ ِ دستور میں تعینات کیاجارہاہے اور پاک فوج کے جوان صرف حساس عمارتوں کے اندر محدود رہیں گے۔

دوسری جانب وفاقی حکومت نے مظاہرین سے نمٹنے کے لئے ریڈ زون میں تیس ہزارس ے زائد پولیس اہلکاروں کو گزشتہ کئی روز سے تعینات کر رکھا ہے اور ان کی مدد کے لئے رینجرز بھی موجود ہے۔

اے آر وائی نیوز کے نمائندے اظہر بن کریم نے ریڈ زون سے برا ہ راست صورتحال سے آگاہ کرتے ہوئے یہ بھی بتایا کہ یہاں تعینات پولیس اہلکاروں کی بڑی تعداد گزشتہ اڑتالیس گھنٹوں سے اس حفاظتی ڈیوٹی پرہے اوران میں سے متعدد اہلکار بیماریوں کا شکار ہوکر چھٹی طلب کر رہے ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top