site
stats
اہم ترین

شکارپور امام بارگاہ پر حملے کا ماسٹر مائنڈ سمیت ساتھی گرفتار

شکارپور: سندھ کی پولیس نے شکارپور امام بارگاہ پر حملے ماسٹر مائنڈ اور ساتھی کوگرفتار کر کے بھاری مقدار میں دھماکہ خیز مواد اور دہشتگردی میں استمعال ہونے والا سامان برآمد کرلیا ہے۔

سانحہ شکار پر کا ماسٹر مائنڈ خلیل بروہی اور اور اسکے ساتھی رسول بخش بروہی کوگرفتار کر لیا گیا، خلیل بروہی ڈیرہ مراد جمالی جبکہ رسول بخش بروہی شکار پور کے نواحی علاقے سے پکڑا گیا۔

ایس اسی پی شکار پور ثاقب میمن کے مطابق خلیل جمالی اور رسول بخش بروہی نے خود کش حملہ آور کو امام بارگاہ حملے کے لیے استعمال کیا۔

اٹھارہ سال کا خود کش حملہ آور الیاس مہمند سانحہ سے ایک ہفتہ قبل شکارپور کے نواحی علاقے خواستی بروہی میں قیام پزیر تھا، ملزمان کی نشاندہی پر گائوں عبدالخالق پنجرانی سے بارود کی فیکٹری، ڈیجیٹل ڈسپلے، پانچ کلو بارودی مواد اور دیگر سامان برامد کیا گیا ۔

چھاپے کے دوان ملزمان کا ساتھی علی شیر فرار ہوگیا۔

دہشتگرد گروپ کے سرغنہ محمد رحیم کا تعلق جیش اسلام اور لشکر جھنگوی سے بتایا جا تا ہے، ملزمان نے چار ماہ قبل علامہ شفقت مطہری کے قتل اور شہداء کمیٹی کے دھرنے پر حملے کی منصوبہ بندی کا بھی اعتراف کیا ہے۔

واضح رہے 30 جنوری کو شکار پور کی امام بارگاہ پر خودکش حملے میں 64 افراد شہید اور متعدد زخمی ہوئے تھے۔ اس سانحہ کے مقدمہ میں پہلے سے گرفتار ملزموں کی نشاندہی پر ان کے دونوں ساتھیوں کو پکڑا گیا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

loading...

Most Popular

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top