site
stats
پاکستان

شکار پور دھماکا خود کش تھا، راجہ عمر خطاب

شکار پور : سی آئی ڈی پولیس ٹیم نے ابتدائی تحقیقات میں شکار پور دھماکے کو خود کش قرار دے دیا ہے، سی آئی ڈی انچارج  کا کہنا ہے کہ خود کش حملہ آور کی عمر بیس سے بائیس سال تھی۔

شکار پور دھماکے نے ملک میں خوف کی لہر دوڑا دی ہے، سی آئی ڈی پولیس کی ٹیم نے شکار پور امام بارگاہ میں شواہد اکٹھے کئے، جس کے بعد وہ ابتدائی تحقیقات میں اس نتیجے پر پہنچے کہ دھماکہ خود کش تھا، انکا کہنا تھا کہ دھماکا اس وقت ہواجب دعامانگی جارہی تھی۔

سی آئی ڈی انچارج راجہ عمر خطاب نے اے آر وائی نیوز سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ خود کش حملہ آور کی عمر بیس سال تھی، جس نے پانچ سے چھ کلو گرام بارودی مواد استعمال کیا۔

سی آئی ڈی انچارج کے مطابق دھماکے میں زیادہ تر ہلاکتیں سر میں بال بیرنگ لگنے سے ہوئیں، اس سے قبل پولیس کی ابتدائی تحقیقات کے مطابق دھماکا پلانٹڈ تھا اور دھماکے میں پانچ سے چھ کلو بارودی مواد استعمال کیا گیا۔

گزشتہ روز مسجدوامام بارگاہ دھماکے میں دہشتگردوں نے اکسٹھ نمازیوں کو موت کی نیند سلادیا تھا، شکار پورکی امام بارگاہ میں جمعے کی نماز کے دوران زور دار دھماکے اس وقت ہوا جب مسجد نمازیوں سے بھری ہوئی تھی جبکہ دھماکے میں کئی افراد موقع پر ہی جاں بحق ہوگئے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top