The news is by your side.

Advertisement

عبدالقادرملا کو پھانسی، پاکستان اوربنگلہ دیش کے تعلقات کشیدہ

بنگلہ دیش میں عبدالقادر ملا کو پھانسی دیئے جانے کے بعد پاکستان اور بنگلہ دیش کے تعلقات میں کشیدگی بڑھتی جا رہی ہے، دفتر خارجہ نے ڈھاکا میں پاکستانی کمیشن کے باہر احتجاج اور قومی پرچم نذرآتش کیے جانے کی شدید مذمت کی ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ نے بنگلہ دیش میں پاکستانی ہائی کمیشن کے باہر احتجاج اور قومی پرچم نذرآتش کرنے کو افسوسسناک قرار دیا ہے، ترجمان نے کہا ہے کہ پاکستان کے سفارتی عملے کی حفاظت بنگلہ دیشی حکومت کی ذمہ داری ہے۔

سیکریٹری خارجہ اعزاز چودھری کے مطابق بنگلہ دیش میں پاکستانی ہائی کمیشن کے باہر مظاہرے کئے گئے، جن میں عبدالقادر ملا کے حوالے سے قرارداد واپس لینے کا مطالبہ کیا گیا، مشیر خارجہ سرتاج عزیز کا کہنا ہے کہ پاکستان کی خارجہ پالیسی خاص کر ہمسایہ ممالک کے معاملات میں عدم مداخلت اور غیر پسندیدہ اصولوں پر وضع کی گئی ہے۔

انھوں نے کہا کہ ملک کی پارلیمان عبدالقادر ملا کی پھانسی کے خلاف قرارداد کا حق رکھتی ہے لیکن خارجہ پالیسی کے تحت یہ بنگلہ دیش کا اندرونی معاملہ ہے، بنگلہ دیش کی وزیراعطم حسینہ واجد کا کہنا ہے کہ پاکستان کا ساتھ دینے والوں کی بنگلادیش میں کوئی جگہ نہیں۔

بنگلادیش کی وزیراعظم حسینہ واجد نے عبدالقادر ملا سے متعلق قرارداد کی مذمت کرتے ہوئے مزید کہا کہ پاکستان نے ثابت کر دیا کہ اس نے بنگلادیش کو دل سے قبول نہیں کیا جبکہ حسنہ واجد یہ بھول گئیں ہیں کہ اب بھی لاکھوں بنگالی پاکستان میں رہتے ہیں اور اپنی زندگی آزادی کے ساتھ گزار رہے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں