site
stats
پاکستان

عدالتی کمیشن نے عام انتخابات میں منظم دھاندلی کو مسترد کردیا

اسلام آباد : عدالتی کمیشن نے سال دو ہزار تیرہ کے عام انتخابات میں  منظم دھاندلی کے ثبوت مسترد کر دئیے۔ درخواست گزار سوالات کا تسلی بخش جواب دینے میں ناکام رہے، جوڈیشل کمیشن کی حتمی رائے رپورٹ جاری ہونے پر سامنے آئے گی ۔

تفصیلات کے مطابق عدالتی کمیشن نے دو ہزار تیرہ کے عام انتخابات میں منظم دھاندلی کو مسترد کردیا ہے، عدالتی کمیشن نے اپنی رپورٹ میں قرار دیا ہےکہ دو ہزار تیرہ کےعام انتخابات میں منظم دھاندلی کے ثبوت نہیں ملے۔

درخواست گزار عدالتی کمیشن کےسوالات کا تسلی بخش جواب دینے میں ناکام رہے۔ ذرائع کے مطابق فارم پندرہ کےحوالے سے پورے ملک میں شکایات اور بد انتظامی کے معاملات سامنے آئے ہیں۔

زائدبیلٹ پیپرز ہر انتخاب کے موقع پر چھاپے جاتے ہیں جس کا مقصد بیلٹ بکس کو راؤنڈ فگر میں لانا ہوتا ہے۔ اسے دھاندلی سےمنسوب نہیں کیاجاسکتا۔

عدالتی کمیشن کی رپورٹ با ضابطہ طور پر جاری نہیں ہوئی ۔کمیشن کی حتمی رائے رپورٹ کے جاری ہونے کے بعد ہی سامنے آ سکےگی۔

علاوہ ازیں پاکستان تحریک انصاف کی جانب سے 2013 کے عام انتخابات میں مبینہ دھاندلی کی تحقیقات کرنے والے جوڈیشل کمیشن نے اپنی رپورٹ وزیراعظم نواز شریف کوبھجوا دی ہے۔ سیکریٹری قانون جسٹس رضا خان نےبدھ کو رپورٹ موصول ہونےاور وزیراعظم کوبجھوانے کی تصدیق کردی۔

واضح رہے کہ  پی ٹی آئی نے عام انتخابات میں منظم دھاندلی، انتخابات کے شفاف نہ ہونے اورعوام کامینڈیٹ چرانے کے الزامات عائد کئے تھے۔

چیف جسٹس ناصر المک کی سربراہی میں قائم ہونے والے جوڈیشل کمیشن نے 16 اپریل کواپنی کارروائی کاآغازکیا تھا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top