The news is by your side.

Advertisement

عدالت نے پرویز مشرف کو حاضری سے عارضی استثنیٰ دیدیا

سابق صدر پرویز مشرف کے خلاف غداری کے مقدمہ کی سماعت کرنے والی خصوصی عدالت نے علالت کے باعث پرویز مشرف کو عدالت میں حاضری سے عارضی استثنیٰ دیدیا، وارنٹ گرفتاری کی درخواست بھی مسترد کردی، احمد رضا قصوری کا کہنا ہے کہ سیاسی لوگوں کے فیصلے سیاسی طریقے سے ہوتے ہیں۔

سابق صدر پرویز مشرف نکلے تو عدالت جانے کیلئے تھے لیکن اسپتال پہنچ گئے، جمعرات کی صبح تقریباً گیارہ بجے سابق صدر پرویز مشرف سخت سیکیورٹی حصار میں اپنے فارم ہاؤس سے نکلے لیکن دل میں تکلیف کے باعث انھیں راستے سے ہی آرمڈ فورسز انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی راولپنڈی منتقل کردیا گیا۔

سابق صدر پرویز مشرف کےخلاف غداری کے مقدمہ کی سماعت کرنے والی خصوصی عدالت نے پرویز مشرف کو بیماری کے باعث ایک دن حاضری  سے استثنیٰ دیدیا، خصوصی عدالت کے جسٹس فیصل عرب نے سابق صدر کی عدم پیشی پر وارنٹ گرفتاری کی استدعا مسترد کرتے ہوئے قرار دیا کہ پیر کو صورتحال دیکھ کر فیصلہ دیا جائے گا۔

پرویز مشرف کے وکلا میں شامل بیرسٹر سیف کا کہنا تھا کہ عدالت نے حالات کو مدنظر رکھ کر فیصلہ دیا، بیرسٹر احمد رضا قصوری نے کہا کہ ان کی پرویز مشرف سے ملاقات نہیں ہوسکی لیکن سیاسی لوگوں کے فیصلے سیاسی طریقے سے ہوتے ہیں، عدالتوں سے نہیں، اس سے پہلے سابق صدر پرویز مشرف غداری کے مقدمہ میں خصوصی عدالت میں پیش نہ ہوئے توعدالت نے برہمی کا اظہار کیا۔

جسٹس فیصل عرب نے قرار دیا کہ پرویز مشرف ہر صورت پیش ہوں بصورت دیگر ان کے وارنٹ جاری کئے جاسکتے ہیں لیکن دل کے عارضے کے باعث عدالت نے عبوری حکم جاری کرتے ہوئے سابق صدر پرویز مشرف کو حاضری سے استثنیٰ دے دیا اور سماعت پیر تک ملتوی کردی۔
    

   

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں