site
stats
اہم ترین

عمران خان اور طاہر القادری کے ہر آئینی مطالبات تسلیم کرنے کو تیار ہیں، چودھری نثار

اسلام آباد: حکومت نے تحریک انصاف اور پاکستان عوامی تحریک سے بات چیت کیلئے کمیٹی تشکیل دینے کا فیصلہ کر لیا ہے، چودھری نثار علی خان کا کہنا تھا کہ عمران خان اور طاہر القادری کی ہر جائز بات ماننے کو تیار ہیں۔

اسلام آباد  میں پریس کانفرنس وفاقی وزیر داخلہ چودھری نثار علی خان نے کہا کہ دونوں جماعتوں سے مذاکرات کیلئے الگ الگ کمیٹیاں تشکیل دی جائیں گی۔ مذاکراتی کمیٹیوں میں دوسری جماعتوں کے نمائندے بھی شامل ہونگے، چودھری نثار کا کہنا تھا کہ افہام و تفہیم اور ٹیبل پر آکر بات کرنا ہی جمہوریت کا حُسن ہے، میری عمران خان اور ڈاکٹر علامہ طاہر القادری صاحب سے التجا ہے کہ خدا کیلئے پاکستان کے عوام کی زندگی آسان کر دیں۔ اس وقت قوم کو اتحاد کی ضرورت ہے۔ ہم آپ کی تمام باتیں ماننے کیلئے تیار ہیں لیکن اس کیلئے پارلیمنٹ کا راستہ اپنایا جائے۔

وزیر داخلہ نے کہا کہ میں حیران ہوں کہ عمران خان کو سول نافرنامی لگانے کی تجویز کس نے دی ہے۔ پاکستان اس وقت مسائل میں گھرا ہوا ہے۔ ہم کیوں اس کا مذاق بنانے پر تُلے ہوئے ہیں۔ پاکستان میں 4 مارشل لا لگے لیکن کبھی کسی نے سول نافرنامی لگانے کی بات نہیں کی۔ ان کا کہنا تھا کہ اگر کوئی اپنے لانگ مارچ میں 10 لاکھ افراد نہیں لا سکا تو اس کا غصہ حکومت اور پاکستانی عوام پر نہ نکالا جائے کیونکہ اس میں ہمارا کوئی قصور نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ ریڈ زون میں نہ تو مسلم لیگ (ن) کے دفاتر ہیں اور نہ ہی ہمارے عہدیدار ہیں۔ تماشا لگانے والوں نے ریڈ زون کو مذاق بنا لیا ہے۔ ریڈ زون میں حساس ادارے، عمارتیں اور غیر ملکی سفارتخانے ہیں۔ ریڈ زون میں کسی کو بھی جانے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ انہوں نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ پاکستان کے مستقبل کا سوال ہے ورنہ میں سیاست میں کسی کا قرض نہیں چھوڑتا۔ میری اور عمران کی 45 سال پرانی دوستی ہے۔ میں عمران خان کی کسی بات کا جواب نہیں دوں گا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top