site
stats
اے آر وائی خصوصی

قومی سیاست کی تاریخ میں سیاستدانوں کیخلاف ایف آئی آر کی مثالیں

کراچی (ویب ڈیسک) – سیاست کی خارزار جھاڑیوں میں قدم رکھنے والے سیاستدانوں کو بعض اوقات اس کی بھاری قیمت بھی چکانی پڑتی ہے، پاکستانی سایست میں اس کی کئی مثالیں موجود ہیں۔

اسلام آباد کے شاہراہ دستور پر پاکستان عوامی تحریک کے جانثار کارکنوں نے دھرنا دیا ہوا ہے۔  ڈاکٹر طاہرالقادری کا مطالبہ ہے کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن کے جاں بحق افراد کے ناحق قتل پر وزیر اعظم نواز شریف، وزیر اعلی پنجاب شہباز شریف اور دیگر ملزمان کیخلاف ایف آئی آر درج کر کے انہیں سزا دی جائے۔

سیاستدانوں کے خلاف ایف آئی آر کے اندراج کا یہ کوئی پہلا واقعہ نہیں بلکہ پاکستانی سیاست کی تاریخ اس طرح کی مثالوں سےبھری پڑی ہے۔

 جماعت اسلامی کے بانی مولاناسید ابوالاعلیٰ مودودی کو ایک مذہبی نوعیت کے مقدمے کے بعد سزائے موت سنائی گئی تاہم ملکی اور بین الاقوامی دباؤ پرحکومت کو سزائے موت کا فیصلہ واپس لینا پڑا لیکن دوسال سے زائد عرصے تک انہیں قید کی سزا برداشت کرنا پڑی۔

پاکستان کے پہلے سول مارشل لاء ایڈمنسٹریٹر ذوالفقار علی بھٹو کے خلاف نواب محمد احمد کے قتل کے الزام میں ایف آئی آر درج کی گئی اور ضیا الحق کے دورِاقتدار میں پھانسی دی گئی۔ مسلم لیگ کے سربراہ نوازشریف کےخلاف سابق آرمی چیف جنرل پرویز مشرف کے طیارے کو ہائی جیک کرنے کے الزام میں ایف آئی درج کی گئی۔

ایم کیو ایم کے قائدالطاف حسین پر انیس سواناسی میں پہلی مرتبہ یونیورسٹی میں ہنگامہ آرائی کے الزام میں مقدمہ درج کرکے انہیں چھ ماہ کی سزادی گئی، جبکہ اس کے بعد بھی انہیں مختلف الزامات میں مقدمات کا سامنا کرنا پڑا۔

سابق صدرآصف زرداری بھی کئی سال کا عرصہ کرپشن کے الزامات کے تحت زنداں میں اسیری کے ایام کاٹ چکے ہیں، کچھ عرصہ قبل ہی ایک مقدمہ سابق وزیراعلی خیبر پختونخواہ امیر حیدر ہوتی کے والد اور عوامی نیشنل پارٹی کےرہنما اعظم ہوتی کے خلاف درج کیا گیا، جس میں ان پر الزام لگایا گیا کہ انہوں نے ایک خاتون سے نکاح پر نکاح کیا ہے۔

ایک بار پھر نوازشریف اورانکے بھائی شہباز شریف سمیت اکیس افراد کے خلاف سانحہ ماڈل ٹاؤن کے واقعے پر ایف آئی آردرج کی گئی ہے اور اس ایف آئی آر کے اندراج کے لئے پاکستان عوامی تحریک کو بارہ دن تک اسلام آباد کی شاہراہ ِ دستور پر دھرنا دیا اور تا حال وہ نظام کی تبدیلی کے لئے دھرنا دئے بیٹھے ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

loading...

Most Popular

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top