لائن آف کنٹرول پر امن پاک بھارت دونوں کے مفاد میں ہے، دفتر خارجہ -
The news is by your side.

Advertisement

لائن آف کنٹرول پر امن پاک بھارت دونوں کے مفاد میں ہے، دفتر خارجہ

اسلام آباد: ترجمان دفتر خارجہ نے کہا ہے کہ کشمیر پر بھارتی بیان بازی سے حقائق تبدیل نہیں کئے جاسکتے ہیں۔

ترجمان دفتر خارجہ کا کہنا تھا کہ پاکستان بھارت کے ساتھ تمام مسائل پر بات چیت کے لئے تیار ہے۔کشمیر متنازعہ علاقہ ہے جس کا واحد حل اقوام متحدہ کی قراردادوں پر عملدرآمد میں پوشیدہ ہے۔

دفترخارجہ کی ہفتہ وار نیوز بریفنگ میں ترجمان دفتر خارجہ قاضی خلیل اللہ نے بتایا کہ روس کے شہر اوفا میں پاک بھارت وزرائے اعظم ملاقات میں تمام مسائل حل کرنے پر اتفاق کیا گیا ہے۔ پاکستان بھارت کے ساتھ تمام مسائل پر بات چیت کے لئے تیار ہے۔
ان کا کہنا تھا کہ مسئلہ کشمیر کا واحد حل اقوام متحدہ کی قراردادوں پر مکمل عملدرآمد ہے۔ترجمان دفتر خارجہ نے بتایا کہ آج بھارتی ہائی کمشنر کو دفتر خارجہ طلب کرکے ڈرون طیارے سے پاکستان کی جاسوسی کرنے پر بھارت سے شدید احتجاج کیا ہے۔

ان کےمطابق گیارہ جولائی کو ایل او سی کی خلاف ورزی پر بھی بھارت سے احتجاج کیا گیا ہے۔ بھارتی جاسوس طیارے نے بین الاقوامی قوانین اور انیس سو اکیانوے کے پاک بھارت معاہدے کی خلاف ورزی کی۔ بھارتی فوج کی بلااشتعال فائرنگ سےچارشہری شہید ہوئے۔ بھارت نے پانچ جولائی کو بھی کنٹرول لائن پرخلاف ورزی کی تھی۔

ترجمان دفتر خارجہ نے بتایا کہ دس جولائی پاکستان کی سفارتی تاریخ کا اہم ترین دن تھا۔ اس دن پاکستان شنگھائی تعاون تنظیم کا مکمل رکن بنا۔ ایس سی او کی مکمل رکنیت کا درجہ ملنا پاکستان کی بہت بڑی کامیابی ہے۔ وزیر اعظم  نوازشریف نے چین ، روس اور افغانستان کے صدور سے ملاقاتیں کیں۔ چینی صدر سے ملاقات میں تعلقات کو نئی بلندیوں پر لے جانے پر اتفاق کیا گیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں